ڈل جھیل اور متعدد آبی ذخائر منجمد، نل بھی جم گئے | 10برسوں میں5ویں بارریکارڈ سردی | سرینگر میں درجہ حرارت منفی6.4،گلمرگ میں 11اور کرگل میں 16.4 درج

سرینگر //وادی کشمیر میں40 دنوں پر محیط سردیوں کے بادشاہ ’چلہ کلان ‘کی آمد سے قبل ہی سردی کی شدت میں ناقابل برداشت اضافہ ہورہا ہے اور فی الوقت شمال و جنوب میں کڑاکے کی سردی پڑرہی ہے۔سردی کی شدت کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ گذشتہ شب 10برسوں میںپانچویں بار سرینگر میں سب سے کم درجہ حرارت ریکارڈ کیا گیا۔ بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب  سرینگر میں رواں موسم کی سرد ترین رات ثابت ہوئی جہاںدرجہ حرارت منفی6.4ڈگری سیلسیش ریکارڈ کیا گیا ۔ادھر یخ بستہ ہوائوں کے نتیجے میں ڈل جھیل ، قدرتی آبی ذخائر اور وادی بھر میں پانی کے دیگر ذخائر جزوی طور پر منجمد ہوئے جبکہ پانی  کے نل بھی جم گئے۔رات بھر کی شدید ٹھنڈ سے جمعرات کی صبح جھیل ڈل کے بعض حصے منجمد تھے نیز شمال و جنوب میں نل جم گئے تھے ۔جھیل ڈل کے علاوہ بھی وادی کئی مقامات پرآبی ذخائر منجمد ہوئے تھے تاہم دن آگے ڈھلنے کے ساتھ ساتھ سورج نکلا اور دھوپ نکل آئی۔محکمہ موسمیات کے ڈپٹی ڈائریکٹر مختار احمد کے مطابق گزشتہ 10 برسوں کے دوران دسمبر کے مہینے میں سرینگر میں چوتھی باردرجہ حرات میں ریکارڈ گراوٹ آئی اور سرینگر میں راتیں سرد ترین راتیں ثابت ہورہی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ سال 2010 میں درجہ حرارت منفی 6.6 ریکارڈ کیا گیا۔21دسمبر 2016 کو درجہ حرارت منفی 6.5 درج کیا گیا ۔ 25 دسمبر 2018کو منفی 7.7ریکارڈ کیا گیا جبکہ 2019میں منفی 6.5 رہا۔ تفصیلات دیتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ2011میں منفی 4.9  ، 2012میں منفی4.0،  2013میں منفی 5.3، 2014میں منفی 5.6، 2015میں منفی 5.6، سال 2016 میں منفی6.5 ، 2017میں منفی 4.2، سال 2018 میں منفی 7.7، 2019 میںمنفی6.5 اور 2020میں اب منفی 6.7 درجہ حرارت ریکاڈ کیا گیا۔اسکے علاوہ گزشتہ دس برسوں کے دوران سرینگر میں 244.0ملی میٹر بارش دسمبر کے مہینے میں ریکارڈ کی گئی  ۔ محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ رواں دسمبر کے مہینے میں موسم خشک رہنے کی صورت میں کم سے کم درجہ حرارت میں مزیدگراوٹ آنے کا امکان ہے ۔ سیاحتی مقام گلمرگ مسلسل سرد ترین مقام رہا جہاں کم سے کم درجہ حرارت منفی 11.0 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ ہوا ۔محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ مطلع صاف رہنے کی وجہ سے وادی کشمیر میں کم سے کم درجہ حرارت میں گراوٹ درج ہو رہی ہے اور اگلے چند روز کے دوران درجہ حرارت میں مزید کمی درج ہونا متوقع ہے ۔انہوں نے بتایا کہ وادی کشمیر میں رواں ماہ کی 23 تاریخ تک موسم خشک رہنے کی امید ہے ۔دریں اثناء محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ امسال کشمیر سمیت پورے شمالی بھارت میں شدید سردی پڑے گی اور چلہ کلان میں حالات مزید ابتر ہوں گے ۔مذکورہ محکمہ کے مطابق شوپیان میں گذشتہ شب منفی 10، قاضی گنڈ میں منفی 4.9  پہلگام میں منفی 8.9 ، کپوارہ میں منفی 5.8 جبکہ کوکر ناگ میں کم سے کم درجہ حرارت منفی 4.8 ڈگری ریکارڈ کیا گیا۔لداخ یونین ٹریٹری کے ضلع لیہہ میں کم سے کم درجہ حرارت منفی 14.9 ڈگری سینٹی گریڈ جبکہ ضلع کرگل میں کم سے کم درجہ حرارت منفی 16.4 ڈگری ریکارڈ ہوا ۔