ڈاکٹر فاروق عبداللہ کی جائیدادکی منسلکی کا معاملہ | اینفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ کاکام صرف تحقیقات | فیصلہ کرنے کی مجازعدالت :پردیش کانگرنس

 سرینگر//پردیش کانگریس صدر غلام احمد میر نے بدعنوانی کے ایک کیس میں سابق وزیر اعلیٰ ڈاکٹر فاروق عبد اللہ کی جائیداد انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) کی طرف سے منسلک کر نے پر حیرانگی کااظہار کرتے ہوئے کہاکہ’ ای ڈی‘ کام صرف تحقیقات کرنا تھا اور عدالت کا کام فیصلہ سنانا تھا۔( کے این ایس  کے مطابق پردیش کانگریس کے صدر غلام احمد میرنے انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) کی طرف سے جموں و کشمیرکے سابق وزیراعلیٰ ڈاکٹر فاروق عبداللہ کی جائیدار منسلک کرنے پر اتوار کو اپنے اخیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا میں حیران ہوں کہ’ ای ڈی‘ نے یہ فیصلہ کس طرح سنایا ۔انہوں نے کہا تحقیقاتی ایجنسی کا کام صرف تحقیقات کرنا اورملوث ہونے کی صورت میں مذکورہ شخص یا فرد کا کیس میںعدالت  جاتا ہے اور اس طرح سے عدالتی فیصلہ ہی تسلیم کیا جاتا ہے کیوں کہ عدالت میں ملزم کی بات کو بھی سنا جاتا ہے ۔میر نے کہا جس طرح کل سب لوگ انتخابی نتائج سننے کے لئے تیار تھے اور یہ خبر آئی ہے ۔انہوں نے کہا ایسا لگتا ہے کہ یہ معاملہ بھی’’ آرگنائزڈ ‘‘ ہے ۔پردیش کانگرس صدر نے کہا ہے قانون کو اپنا کام کرنا چاہیے لیکن جس طرح قانونی کارروئی کو ’وارداتوں‘ میں تبدیل کیا جاتا ہے ۔انہوں نے کہا ہم اس کیس کے سلسلے میں پہلے ہی سن چکے ہیں ۔میر نے کہا فاروق عبداللہ اسے قبل بھی اگست 2019ء میں وزیر عظم سے ملے ہیں اور اسکے بعد وہ بند رہے جس کے بعد آزاد ہوئے اور اب انتخابات کے نتائج کا اعلان کے منتظر ہونے کے ساتھ ہی یہ خبر دی گئی ہے ۔انہوں نے کہا الزام بازی ہوتی رہتی ہے، لیکن جس طرح یہاں ہر ایک چیز کو ’واردات‘ بنایا جاتا ہے وہ حیران کن ہیں ۔