ڈاکٹر عبدالاحد گورو کی یاد میں تقاریب کا اہتمام

سرینگر//لبریشن فرنٹ نے ڈاکٹر عبدالاحد گوروکو خراج عقیدت اداکرتے ہوئے کہا کہ جو لوگ کشمیر کی تحریک آزادی کو بے روزگاری اور تعلیم کی کمی سے نتھی کرتے ہیں انہیں ڈاکٹر عبد الاحد گوروکی زندگی ،جدوجہد اور قربانی کا جائزہ لےنا چاہئے جنہوں نے اعلیٰ ترین تعلیم یافتہ اور ایک بلند پایہ سرجن ہونے کے باوجود تحریک آزادی میں عملی حصہ لیا اور اپنی جان اسی راہ عزیمت میں لٹا دی۔فرنٹ کے محبوس چیئرمین محمد یاسین ملک نے ایک بیان میں ڈاکٹر عبدالاحد گورو کی کی برسی پر انہیں یاد کرتے ہوئے کہاکہ ڈاکٹرگورو ایک نابغہ¿ روزگار شخصیت تھے جنہوں نے اپنی جدوجہد،انسانیت نوازی اورطبّی میدان میں اپنی بے پناہ صلاحیتوں، سماجی خدمات اور راہ عزیمت میں اپنی قربانی کے بل پر ایک منفرد مقام حاصل کیا اور جب تک کشمیر کی تاریخ عزیمت لکھی جاتی رہے گی اُن کا نام سنہرے حروف سے لکھا جاتا رہے گا۔ فرنٹ چیئرمین نے کہا کہ ڈاکٹر گورو جیسی اعلیٰ مرتبت شخصیات قوموں کاافتخار ہوا کرتے ہیں اور جدوجہد آزادی سے لیکر سماجی خدمات کے میدان میں جو جوہر نمایاں اِس عظیم شخصیت نے دکھائے وہ انہی کاخاصہ تھے۔ یاسین ملک نے کہا کہ زندہ قوموں کی پہچان اور شناخت کا ذریعہ بننے والی یہ شخصیات اپنی مسحور کن زندگی سے نہ صرف اپنے اردگرد کے ماحول کو متاثر کرتی ہیں بلکہ عالم انسانیت کو بھی معطّر بنادینے میں اپنا حصہ ادا کرتی ہیں۔ یاسین ملک نے کہا کہ جموں کشمیر کی تحریک آزادی کو شروع کرنے اور پروان چڑھانے میں بڑے دانشور، علمائ،قانون دان،اساتذہ اور مدبر اپنی جانوں کی بازی لگاچکے ہیں جس کی مثال اشفاق مجید وانی، ڈاکٹر عبدالاحد گورو، ایڈوکیٹ جلیل اندرابی، مولانا شبیر احمد صدیقی، پروفیسر عبدالاحد وانی، ڈاکٹر غلام قادر صوفی(ترابی)،شمس الحق ،مفتی جمال الدین، پائلٹ ندیم خطیب، ایڈوکیٹ غلام قادر سیلانی،مولانا شوکت احمد شاہ، پروفیسر محمد رمضان وغیرہ ہیں جو نہ صرف اعلیٰ تعلیم یافتہ تھے بلکہ زندگی کے مختلف میدانوں میں کامیاب ترین افراد میں سے تھے۔ ڈاکٹر صاحب کشمیر کے پہلے ڈاکٹر تھے جنہوں نے اوپن ہارٹ سرجری کرکے کشمیر کے حوالے سے طبّی تاریخ میں ایک نئے باب کا اضافہ کیا۔ صورہ مڈیکل انسٹچوٹ کو ایک بلند پایہ ہسپتال بنانے میں اُن کا جو تاریخ ساز رول رہا ہے اُس کو بھی تاریخ کشمیر فراموش نہیں کرسکتی ہے۔ کشمیر کے اندر شعبہ طِب میں نئے اُبھرتے ہوئے ڈاکٹر صاحبان کی تعلیم و تربیت میں اُن کی کاوشیں مثالی رہی ہیں۔ ڈاکٹر گورو کی یاد میں سنیچر کومرحوم کے گھر واقع برزلہ میں ایک تعزیتی تقریب ہوئی جس میں لبریشن فرنٹ کا ایک اعلیٰ سطحی وفد نائب چیئرمین ایڈوکیٹ بشیر احمد بٹ کی سربراہی میں شامل ہوا۔اسی طرح ایک اور وفد یاری پورہ کولگام پہنچا جہاں انہوں نے حال ہی میں جاں بحق ہونے والے جوان توصیف احمدکے لواحقین کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا۔ اس وفد کی قیادت لبریشن فرنٹ کے قائد ظہور احمد بٹ کررہے تھے۔