چین کی کسی بھی جارحیت کا بھر پور جواب دینا ہوگا:جنرل راوت

سرینگر//بھارت کو چین کی طرف سے کسی بھی غیر متوقع صورتحال کیلئے تیاررہنا چاہیے اور ماضی کی طرح کسی بھی جارحیت کا بھرپور جواب دینا ہوگا۔ان باتوں کااظہار فوج کے چیف آف ڈیفینس اسٹاف جنرل بپن راوت نے کیا ہے۔چیف آف ڈیفنس سٹاف جنرل بپن راوت نے کہا ہے کہ خطے میںپائیدار امن کیلئے چین اور بھارت کو لداخ میں جوں کی توں صورتحال برقراررکھنے کیلئے کوششیں کرنی چاہئے تاکہ دونوں جانب امن قائم ہو ،اور سرحدوں پر تنائو ختم ہو۔سی این آئی کے مطابق سال 2020سے لداخ میں چین اور بھارت کے مابین سرحدی کشیدگی بنی ہوئی ہے ،تاہم اس میں گزشتہ کئی ماہ سے کمی ضرور ہوئی ہے لیکن کشیدگی پوری طرح سے ختم نہیں ہوئی ہے ۔ اس بیچ بھارت کے چیف آف ڈیفنس جنرل بپن راوت نے چین پر زور دیا ہے کہ مشرقی لداخ میں صورتحال  کو برقرار رکھنے کیلئے اقدامات اُٹھانے چاہئے ۔اس کے ساتھ ہی جنرل راوت نے کہا کہ بھارت کو کسی بھی غیر متوقع صورتحال کیلئے بھی تیار رہنا چاہئے اور ماضی کی طرح کسی بھی جارحیت کا بھر پور جواب دینا ہوگا۔ انہوںنے کہا کہ ہمیں کسی تغافل کا مظاہرہ نہیں کرنا چاہیے، بلکہ اپنی تیاریاں مکمل ہونی چاہئے ۔ ایک سوال کے جواب میں چیف آف ڈیفنس نے کہا کہ حالات کو بہتر بنانے اوریہ مسئلہ حل کرنے کیلئے بھارت اور چین ، سیاسی ،سفارتی  اورفوجی سطح پر مصروف ہے ۔انہوںنے کہا کہ اگر ہم لداخ میں سابق پوزیشن کی بحالی کی طرف توجہ نہیں دیں گے اور موجودہ صورتحال پراکتفاء کریں گے ،تو آگے چل کر کسی بھی وقت حالات پھر سے کشیدہ ہوسکتے ہیںجو دونوں ممالک کے لئے بہتر نہیں ہوگا ۔انہوں نے کہاکہ اگر لداخ میں پہلے پوزیشن پر چین نہیں جاتا تو یہ دونوں کیلئے مشکل بڑھائے گا جبکہ بھارت بھی بڑی تعداد میں فوج اوردیگر سامان بھیجنے کیلئے مجبور ہوگا۔