چین نے افغانستان میں اپنی فوج کی تعیناتی سے متعلق خبروں کو بے بنیاد قرار دے دیا

بیجنگ// چین نے افغانستان میں اپنی فوج کی تعیناتی کے الزامات مسترد کردیے، حکام نے ایسی خبروں کو بے بنیاد قرار دیا ہے۔تفصیلات کے مطابق چین سے متعلق یہ الزامات عائد کیے جارہے تھے کہ وہ اپنی فوجی دستے افغانستان میں تعینات کر رہا ہے تاہم حکام نے ایسی تمام خبروں کو بے بنیاد قرار دیا ہے۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ترجمان چینی وزارت دفاع کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ مشرقی افغانستان میں چینی فوجی اڈے کے قیام اور افواج کی تعیناتی سے متعلق افواہوں بے بنیاد ہوں۔وزارت دفاع کے مطابق دفاعی صلاحیت بڑھانے اور انسداد دہشت گردی کے سلسلے میں کابل حکومت کو معاونت فراہم کی جا رہی ہے، تاہم اپنی فوجی دستے افغانستان میں تعینات نہیں کر رہے۔دوسری جانب افغانستان میں طالبان کے حملے جاری ہیں، دو روز قبل افغان صوبے فریاب میں سیکیورٹی فورسز اور طالبان کے درمیان جھڑپوں میں مبینہ طور پر 73 طالبان ہلاک جبکہ 31 زخمی ہوئے تھے، دو طالبان کمانڈر بھی حملے میں مارے گئے تھے۔یاد رہے کہ گزشتہ کچھ دنوں سے افغان طالبان نے اپنی کارروائیوں کا دائر ہ کار افغانستان کے متعدد علاقوں میں پھیلا دیا ہے اور عید الاضحیٰ کے موقع پر افغان صدر اشرف غنی کی جانب سے جنگ بندی کی مشروط پیشکش کو بھی مسترد کردیا تھا۔واضح رہے کہ طالبان کا مطالبہ ہے کہ وہ 17 سال سے جاری اس جنگ کے لیے افغان حکومت کیبجائے براہ راست امریکی حکومت کے ساتھ مذاکرات کریں گے کہ وہی اس جنگ کا اصل محرک ہیں۔