چھترا ل ۔پٹھانہ تیر لفٹ واٹر سپلائی سکیم نامکمل لاکھوں روپے خرچ کرنے کے بعد بھی لوگ پانی کی قلت کاشکار

جاوید اقبال
مینڈھر //مینڈھر سب ڈویژن کے چھترال علاقہ سے پٹھانہ تیر گائوں تک تعمیر ہونے والی لفٹ واٹر سپلائی سکیم لاکھوں روپے خرچ کرنے کے بعد بھی مقامی لوگوں کیلئے سود مند ثابت نہیں ہوئی جس کی وجہ سے علاقہ میں پینے کے صاف پانی کی شد ید قلت پید اہو گئی ہے ۔مکینوں نے محکمہ جل شکتی کے آفیسران و ملازمین کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ 2009میں سکیم کی تعمیر کا عمل شروع کیاگیا تھا لیکن 14برسوں کے بعد بھی عوام کو پینے کا صاف پانی فراہم نہیں کیاجارہا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ ابھی تک سکیم کی تعمیر کیلئے لگ بھگ 3.25کروڑ روپے کی رقم خرچ کرلی گئی ہے تاہم پانی کی سپلائی پاپئیں جگہ جگہ سے ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں جس کی وجہ سے چھترال سے لفٹ ہونے والا پانی پٹھانہ تیر تک پہنچ ہی نہیں رہا ہے ۔غور طلب ہے کہ مذکورہ واٹر سپلائی سکیم کے مکمل ہونے کی وجہ سے علاقہ کی وسیع عوام کو فائدہ پہنچ سکتا تھا ۔ْبھاجپا یوتھ لیڈر تنویر اقبال قریشی نے الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ محکمہ کی جانب سے سرکاری خزانے کر بھاری چونا لگانے کے بعد بھی عوام کو بنیادی سہولیات میسر نہیں ہیں ۔مقامی لوگوں نے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ سرکاری خزانے سے استعمال ہونے والی رقم کیساتھ ساتھ زمینی سطح پر کئے گئے کام کی جانچ کرواکر عوام کو بنیادی سہولیات فراہم کی جائیں ۔