چند ریاستوں میں انتظامیہ سست روی کا شکار

 نئی دلی //چند ریاستوں میں انتظامیہ کی سست رویہ کا سنجیدہ نوٹس لیتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی نے تمام وزرائے اعلیٰ کو ہدایت دی ہے کہ وہ آئندہ 2سے 3ہفتوں میں کورونا وائرس کی روک تھام کیلئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات اٹھائیں۔ وزیر اعظم نے 11سے 14اپریل تک ٹیکہ کاری فیسٹول منانے کی بھی ہدایت دی جہاں زیادہ سے زیادہ لوگوں کو ویکسین دیا جائے گا۔ وزرائے اعلیٰ کے کورونا وائرس کی موجودہ صورتحال اور ٹیکہ کاری مہم پر تبادلہ خیال کرنے کیلئے بلائی گئی ورچیول کانفرنس کے دوران وزیر اعظم نے کہا کہ کورونا وائرس سے نپٹنے کیلئے ملک کے پاس پہلے سے کئی وسائل موجود ہیں اور اب چھوٹے متاثرہ علاقوں پر توجہ مرکوز ہونی چاہئے۔ انہوں نے کہا ’’ انتظامی نظام کو بہتر بنانے کی ضرورت ہے، میںسمجھتا ہوں کی ایک سال کی لڑائی کے بعد سسٹم میں تھکاوٹ اور سستی پیدا ہوسکتی ہے ، اسلئے ہمیں آئندہ 2 سے 3 ہفتوں میں انتظامیہ کو مضبوط بنانا ہے۔ مودی نے ٹیسٹ ، تلاش ، علاج اور تمام لوگوں کو قوائد و ضوابط پر عمل کرنے پر زور دیا۔ انہوں نے کہا کہ لوگوں کے شامل ہونے سے، ڈاکٹروں کی محنت اور طبی و نیم طبی عملہ کی مدد سے ہم نے صورتحال کو بہتر طریقے سے قابو کیا اور ابھی بھی کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کئی ریاستوں میں انتظامیہ کی سستی سے متاثرین کی تعداد میں اضافہ سے مشکلات میں اضافہ ہو ا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وائرس کے پھیلائو کو روکنے کیلئے جنگی بنیادوں پر کام کرنے کی ضرورت ہے۔ ملک میں روزانہ متاثر ہونے والے افراد کی تعداد 1لاکھ 26ہزار ہوگئی ہے جبکہ چند ہفتوں پہلے یہ صرف 20ہزار تھی۔ اتوار کو سینئر افسران کے ساتھ میٹنگ میں انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس اور ٹیکہ کاری اور متاثرین کی بڑھتی ہوئی تعداد اور اموات میں اضافہ کی وجہ سے صورحال سنگین ہوگئی ہے۔ وزیر اعظم نے پانچ نکاتی پالیسی ترتیب دی جس میں ٹیسٹنگ ، متاثرین کی نشاندہی، معیاری ضابطہ اخلاق اور ویکسین کیلئے سنجیدگی شامل ہے ، جو کورونا کو قابو کرنے میں مدد گار ثابت ہوگا۔