چنائو کشمیریوں کے مفادات پر ضرب

سرینگر// مشترکہ مزاحمتی قیادت سید علی شاہ گیلانی،میرواعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک نے مجوزہ پنچایتی چنائو کا بائیکاٹ کرنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہبھارتی نظام اور تسلط کے ماتحت ہونے والا ہر الیکشن خواہ وہ نام نہاد اسمبلی کیلئے ہوں کہ بھارتی پارلیمان کیلئے یا پھر بلدیاتی ہوں کہ پنچایتی، ہر صورت میں کشمیریوں کے مفادات پر کاری ضرب ہیں۔ انہوں نے مشترکہ بیان میں کہا ہے جموں کشمیر میں جمہوریت اور انسانیت کی مٹی پلید کرنے والے بھارتی حکمران اور انکے ریاستی حمایتی عرصۂ دراز سے الیکشن ڈرامے کے ذریعے کشمیریوں کے مطالبۂ حق خودارادیت اور جدوجہد ِ آزادی کی نفی کرتے آرہے ہیں۔ قائدین نے کہا کہ ایک زندہ و جاوید قوم و ملت کی حیثیت سے ہم پر فرض ہے کہ ہم قربانیاں دینے والوں کو فراموش نہ کریں۔ انہوں نے سوال کیا کہ یہ کیسے ممکن ہے کہ ہم اُن جماعتوں اور کٹھ پتلیوں کو ووٹ ڈالیں جو یہاں آر ایس ایس کی فسطائی حکمرانی قائم کرنے کے درپے ہیں‘ جو یہاں کی مسلم شناخت اور آبادی کے تناسب کو تبدیل کرکے کشمیریوں کو زچ کرنے کی سازشیں بن رہے ہیں اور جنہوں نے پیلٹ کا بے دریغ استعمال کرکے ہزاروں کی بینائی سلب کی ،ہزراوں کو پابند سلاسل کیا، جو کڑاکے کی سردی میں ہمارے گھروں اور محلہ جات کو کرفیو اور آگ و آہن کی نذر کرنے میں مصروف ہیں اور جو کشمیریوں کی تحریک مزاحمت کو کچلنے کیلئے ہر سازش اور ہر ظلم روا رکھا ہوا ہے۔بھارت ہمیشہ اس عمل کو جموں کشمیر پر اپنے قبضے کو مضبوط کرنے نیز عالمی برادری کو دھوکہ دینے کیلئے استعمال کرتا ہے اور یہ عمل بہرصورت ہمارے اوپر ڈھائے جانے والے مظالم پر پردہ ڈالنے کیلئے ہی استعمال ہوتا ہے۔قائدین نے کہا کہ بھارتی آئین کے تحت ہونے والے یہ الیکشن دراصل کشمیریوں کی آزادی کو سلب کرنے اورظلم و جبر پر پردہ ڈالنے کا عمل ہیں اور ان کا مکمل با ئیکاٹ کرنا ہم سبھی پر فرض ہے۔
 
 
 
 

میر واعظ خانہ نظر بند

نیوز زدیسک
 
سرینگر //حریت (ع) چیئر مین میر واعظ عمر فاروق کو ایک بار پھر خانہ نظر بند کردیا گیا ہے۔پروگرام کے مطابق انہیں جمعرات کودستگیر صاحب خانیار کے آستان عالیہ میں سالانہ عرس کے موقعہ پر زائرین سے واعظ و تبلغ فرمانا تھا۔مذکورہ آستانہ پر میرواعظ کا خطاب اور تبلیغ ایک قدیم روایت ہے۔ادھرنماز عصر کے بعد آستان عالیہ کے باہر زائرین نے حکومتی اقدام کے خلاف احتجاج کیا۔حریت نے میر واعظ کی خانہ نظر بندی کی مذمت کی ہے۔