چار گلیاروں والا سڑک پروجیکٹ اور ماحولیات

 سرینگر//صوبائی کمشنر کشمیر بصیرا حمد خان نے نیشنل انورنمنٹل انجینئرینگ ریسرچ انسٹچیوٹ ناگپور پر چار گلیاروں والے سڑک پروجیکٹ سے ماحولیات پر پڑنے والے اثرات کا سروے کرنے اوردس دن کے اندر اندر رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت دی ہے۔صوبائی کمشنر نے ان باتوں کا اظہار آفیسران کی ایک میٹنگ کے دوران کیا جس میں سرینگر میں آبی ذخائر کے امو رپر تبادلہ خیال کیا گیا۔میٹنگ میں وی سی لاﺅڈا کے علاوہ ایس ایم سی ایس ڈی اے ،ایکولاجی اورانورنمنٹ اور سنسنگ کے علاوہ دیگر آفیسران بھی موجود تھے۔صوبائی کمشنر نے کہا کہ سروے کے دوران چار گلیاروں والے سڑک پروجیکٹ سے آبی ذخائر پر پڑنے والے اثرات کا مطالعہ کیا جائے گا اوراس صورتحال سے کیسے نمٹاجاسکے گا۔صوبائی کمشنر نے نیری نمائندوں کو کام میں سرعت لانے کی ہدایت دی تاکہ پروجیکٹ پر فوری طور کام شروع کیاجاسکے۔جھیل ڈل میںناجائز تعمیرات وتجاوزات ہٹانے اوراس شہرہ آفاق اثاثے کی عظمت رفتہ بحال کرنے کے لئے صوبائی کمشنر نے لاﺅڈا ،محکمہ ایکولاجی،انورنمنٹ اورریمورٹ سنسنگ نیز محکمہ مال کو باہمی تال میل کے ساتھ کام کرنے پرزوردیا۔انہوںنے کہا کہ محکمہ مال،محافظ خانہ سے پرانے آبی ذخائر کا نقشہ حاصل کرے گا۔تاکہ لاﺅڈا اورریموٹ سنسنگ ڈل جھیل،خوشحال سر اوردیگر آبی ذخائر کی عظمت رفتہ بحال کرسکے۔صوبائی کمشنر نے رکھ آرتھ میں بعض کنبوں کی طرف سے کئی ڈولنگ یونٹوں پر ناجائز قبضے کا سنگین نوٹس لیتے ہوئے آفیسران کو ہدایت دی کہ وہ اس سلسلے میں فوری کارروائیاں کریں اور صرف مستحق کنبوں کو ہی یہاں ڈولنگ یونٹ فراہم کرے۔