پی ڈی پی سینئر لیڈر و سابق ریاستی وزیر صوفی غلام محی الدین کا انتقال

کپوارہ//پیپلز ڈیمو کریٹک پارٹی کے سینئر لیڈر اور سابق وزیر جنگلات صوفی غلام محی الدین مختصر علالت کے بعد منگل کو صورہ میڈیکل انسٹی چیو ٹ میں انتقال کر گئے جس کے نتیجے میں وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کا دورئہ کپوارہ ملتوی کر دیا گیا ۔صوفی غلام محی الدین سرحدی ضلع کپوارہ کے ہندوارہ سے تعلق رکھتے تھے او ر انہیںعلاقہ میں معروف تاجر کے نام سے جانا جاتا تھا۔وہ مرحوم خواجہ عبدالغنی لون کے سب سے قریبی ساتھیوں میں شمار ہوتے تھے۔انتہائی شریف النفس اور ملنساری انہیں خواجہ لون کی قربت سے حاصل ہوئی تھی۔مرحوم کی ہلاکت کے بعد وہ سیاسی میدان میں قسمت آزمائی کرنے کیلئے  آگئے اور انہو ں نے 2002کے انتخابات میں آزاد امید وار کی ٹکٹ پر ہندوارہ حلقہ انتخاب سے الیکشن لڑنے کا فیصلہ کر لیا اور یو ں اپنی سیاسی زندگی کا سفر شروع کیا ۔صوفی غلام محی الدین بحثیت آ زاد امیدوار الیکشن جیت کر اس وقت کے کانگریس ،پی ڈی پی سرکار کی کا بینہ میں جگہ پاکر وزیر جنگلات بنائے گئے ۔صوفی محی الدین نے پی ڈی ایف میں بھی شمولیت اختیار کی تاہم بعد میں وہ پیپلز ڈیمو کریٹک پارٹی میں گئے جس کی ٹکٹ پر انہو ں نے 2008اور2014میں دو بار الیکشن لڑا تاہم دو نوں بار الیکشن ہار گئے ۔صوفی غلام محی الدین گزشتہ ایک ماہ سے علیل تھے اور اس کو کئی بار صورہ میڈیکل انسٹچوٹ میں داخل کیا گیا ۔صوفی محی الدین گزشتہ ایک ہفتہ سے اسپتال میں زیر علاج تھے لیکن منگل کی صبح وہ اپنی زندگی کا جنگ ہار گئے ۔انکے نماز جنازہ میںسینکڑوں لوگ موجود تھے۔جنازہ میں کابینہ وزیر اور پیپلز کانفرنس چیئر مین سجاد غنی لون،ممبر اسمبلی کپوارہ بشیر احمد ڈار ،سابق وزیر اور نیشنل کانفرنس کے سینئر لیڈر چودھری محمد رمضان ،میر سیف اللہ کے علاوہ کئی سماجی و سیاسی تنظیمو ں کے نمائندو ں نے شرکت کی ۔واضح رہے کہ وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کا منگل کے روز کپوارہ کا دورہ متوقع تھا اور یہا ں مختلف پروجیکٹوں کا افتتاح کر نا تھا لیکن پارٹی کے سینئر لیڈر کے انتقال کے بعد وزیر اعلیٰ کا دورئہ آخری وقت پر ملتوی کر نا پڑا ۔