پی ایچ سی منجاکوٹ میں میڈیکل افسر ان کی آسامیاں خالی

پی ایچ سی منجاکوٹ میں گزشتہ کئی دنوں سے میڈیکل افسران کی اسامیاں خالی پڑی ہیں جس کی وجہ سے مریضوں کو شید پریشانیوں سے دوچار ہونا پڑ رہا ہے۔تفصیلات کے مطابق پچھلے کئی ماہ سے این ایچ آر ایم ملازمین کی ہڑتال چل رہی ہے اور پی ایچ سی منجاکوٹ میں این آر ایچ ایم ہی میڈیکل افسران کو تعینات کیا گیا ہے جس سے ڈاکٹر پچھلے کئی ماہ سے اپنی مانگوں کو لیکر احتجاج پر ہیں وہیں جس سے پی ایچ سی منجاکوٹ میں میڈیکل افسران کی موجودگی نہ ہونے پر مریضوں کو سخت پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔لوگوں نے کہا کہ منجاکوٹ ایک سرحدی علاقہ ہے جہاں پر مستقل ایم ایم بی بی ایس عہدہ کا ڈاکٹر ہونا چاہیئے مگر سب کچھ اس کے برعکس ہی چل رہا ہے۔لوگوں نے کہا کہ اس سے ایک بات صاف ظاہر ہوتی ہے کہ گورنر سرکار کو یہاں کے لوگوں کی کوئی بھی قدر نہیں ہے۔لوگوں نے مانگ کی کہ جلد سے جلد یہاں پر ڈاکٹروں کو تعینات کیا جائے ورنہ کوئی بھی بڑے حادثے کی ذمہ دار گورنر سرکار ہو گئی۔اس معاملہ میں بلاک میڈیکل آفیسر منجاکوٹ ڈاکٹر کبیر اعظم سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ میں پہلے سے ہی اعلی افسران کے اس بارے میں مطلع کیا ہوا ہے۔وہیں جب چیف میڈیکل آفیسر راجوری سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ ہمارے پاس کچھ نئے میڈیکل افسران کی تعیناتی ہوئی ہے اور ہم جلد ہی منجاکوٹ میں میڈیکل آفیسر کو تعینات کر رہے ہیں۔