پیگاسس جاسوسی معاملہ اور کسان تحریک پر اپوزیشن کا ہنگامہ جاری

 نئی دہلی/پیگاسس جاسوسی معاملہ اور کسان تحریک پر بحث کے لئے بضد اپوزیشن جماعت کانگریس، ترنمول کانگریس اور بائیں بازو کی جماعتوں نے راجیہ سبھا میں گزشتہ دو ہفتہ سے چل رہے ہنگامہ کو پیر کو بھی جاری رکھا جس کی وجہ سے ایوان کی کارروائی پورے دن کے لئے ملتوی کرنی پڑی۔تین بار ملتوی کئے جانے کے بعد پریسڈائنگ افسربھونیش کالیتا نے تین بجکر 36منٹ پر جب ایوان کی کارروائی شروع کی تو کانگریس، ترنمول کانگریس اور بائیں  بازو کی جماعتوں کے اراکین نعرے لگاتے ہوئے کرسی کے نزدیک آگئے۔ کالیتا نے ہنگامہ کررہے اراکین سے واپس اپنی سیٹوں پر جانے اور ایوان کی کارروائی چلانے میں تعاون کی اپیل کی لیکن اپوزیشن کا ہنگامہ جاری رہا۔ اسی شور و غل کے درمیان انہوں نے اپروپریئشن نمبر 3-4بل 2021ایوان میں پیش کرائے۔ اس کے بعد انہوں نے ایوان کی کارروائی تین بجکر 40منٹ پر پورے دن کے لئے ملتوی کردی۔اس سے پہلے ایوان کی کارروائی اپوزیشن جماعتوں کے ہنگامے کی وجہ سے تین بار ملتوی کرنی پڑی جس کی وجہ سے وقفہ صفر اور وقفہ سوال نہیں ہوسکا۔وقفہ سوال کے دوران حالانکہ کچھ سوالات کے جواب دیئے گئے جنہیں سنا نہیں جاسکا۔ اس کے بعد ایوان کی کارروائی دو بجے تک ملتوی کردی گئی۔صبح چیرمین ایم ونکیا نائیڈو نے جب ایوان کی کارروائی شروع کی تو کانگریس اور ترنمول کانگریس کے اراکین نے اپنی سیٹوں سے ایک ساتھ بولنا شروع کیا۔ چیرمین نے اپنی سیٹ سے آگے نکل آئیں ترنمول کانگریس کی ڈولا سین سے اپنی سیٹ پر جانے کے لئے کہا۔ انہوں نے کہاکہ تو اراکین پلے کارڈ پکڑے ہوئے ہیں ان کے نام بلیٹن میں دیئے جاسکتے ہیں۔ دوبجے جیسے ہی ایوان کی کارروائی پھر سے شروع ہوئی ڈپٹی چیرمین ہری ونش نے جہا ز رانی اور آبی گزرگاہ کے وزیر سروانند سونوال سے اندرون ملک ویسل بل 2021پیش کرنے کے لئے کہا۔ اس درمیان اپوزیشن کے اراکین نے کرسی کے نزدیک آکر ہنگامہ کرنا شروع کردیا۔ ڈپٹی چیرمین نے ہنگامہ کے درمیان ہی بل پر مختصر بحث کرانے کے بعد اسے منظور کرا دیا۔بل میں ندیوں میں جہازوں کی حفاظت، رجسٹریشن اور ہموار آپریشن کا انتظام کیا گیا ہے۔ مسٹر سونووال نے کہاکہ یہ بل 100 برس پرانا ہے اور تبدیل ہوتی ضرورتوں اور حالات کے مدنظر اس میں ترمیم ضروری تھی۔بل منظور ہونے کے بعد انہوں نے ایوان کی کارروائی ایک گھنٹے کے لئے تین بجکر 36منٹ کے لئے ملتوی کردی۔ایوان زیریں ( لوک سبھا) میں پیگاسس جاسوسی ، مہنگائی اور زرعی قوانین سمیت دیگرامور کے معاملے میں اپوزیشن جماعتوں کیاراکین کا ہنگامہ جاری رہا ہے جس کی وجہ سے کھانے کے وقفے کے بعد بھی کام کاج نہیں ہو سکا اور پریزائیڈنگ آفیسر راما دیوی کو ایوان کی کاروائی ساڑے تین  بجے تک ملتوی کرنی پڑی۔ کھانے کے وقفے تک دو مرتبہ کاروائی ملتوی ہونے کے بعد پریذائیڈنگ آفیسر نے جیسے ہی کاروائی شروع کی، اراکین نے پہلے کی طرح ہنگامہ آرائی شروع کر دی لیکن راما دیوی نے ہنگامہ آرائی کے دوران ایوان کی کارروائی چلانے کی کوشش کی۔ (یو این آئی)