پینے کا پانی اور بجلی نہیں،خستہ حال سڑکیں،ظلم و جبر اور ہلاکتیں، عوام پر فورسز کا راج

 سرینگر// حریت (ع) چیئرمین میرواعظ عمر فاروق نے کہا ہے کہ جموں کشمیر کو عملاً ایک پولیس سٹیٹ میں تبدیل کردیا گیا ہے اور عملی طور پر فوج اور پولیس عوام پر راج کر رہے ہیں ۔ انہوں نے ریاستی حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ ریاست کے حکمران ہونے کا دعویٰ کرنے والے عوام کو بنیادی سہولیات بہم پہنچانے میںبھی بری طرح سے ناکام ہوگئے ہیں۔مسلسل تین ہفتوں کی خانہ نظر بندی کے بعد جامع مسجد میںعوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ شدید سردی کے ان دنوں میں جہاں بجلی کی نایابی سے لوگ زبردست مشکلات میںمبتلا ہیں وہیں اکثر مقامات پر پینے کا پانی میسر نہیں ۔ انہوں نے کہا سڑکوں کی خستہ حالی کے باعث روزانہ سڑک حادثوں میں انسانی جانوں کا زیاں جاری ہے جس سے اس ٹولہ کی ناکامی واضح ہوجاتی ہے۔ میرواعظ نے کہا آج کے دور میں بجلی ، سڑک اور پانی کا میسر ہوناکوئی عیش و عشرت نہیں بلکہ یہ بنیادی سہولیات میں شمار ہوتی ہیں تاہم حکمران ٹولہ اقتدار کے نشے میں چور عوامی مشکلات کو حل کرنے میں کوئی دلچسپی نہیں رکھتا۔ میرواعظ نے انتظامیہ کی جانب سے بار بار جامع مسجد میں نماز جمعہ پر پابندی عائد کرنے اورخود انہیں خانہ نظر بند رکھنے کی کارروائیوں کی مذمت اورموجودہ دور کو بدترین دور سے تعبیر کرتے ہوئے کہا کہ ایک طرف وادی میں عوام شدید مشکلات سے دوچار ہیں وہیں یہاں کا حکمران ٹولہ اپنے آقائوں کی خوشنودی حاصل کرنے کے لئے عوام اور مزاحمتی قائدین پر جبر و تشدد میں متواتر اضافہ کر رہے ہیں۔ میرواعظ نے شہر خاص میں آئے روز عوام کے نقل و حمل پر پابندیاں و قدغنیں عائد کرنے اور کشمیر کی تاریخی اور مرکزی  عبادت گاہ جامع مسجد میں بار بار نماز جمعہ ادا کرنے پرپابندی عائد کئے جانے کی مذمت کرتے ہوئے شہر خاص کے عوام سے انتقام گیرانہ عمل قرار دیتے ہوئے کہا کہ حکمران شہر خاص کے عوا م کو ان کی تحریک کے ساتھ غیر متزلزل وابستگی کے لئے ان کو سزا دے رہے ہیں اور قدغنوں کے ذریعے تجارت و معاش کو متاثر کرکے انہیں اقتصادی نقصان پہنچارہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ یونسو ہند واڑہ اور شوپیاں میں مصرہ بیگم اور روبی جان نامی دوبے گناہ نوجوان خواتین کو فوجی آپریشنوں کے دوران ہلاک کیا گیااور اس طرح ان کی شیرخواربچیوں مریم اور عذرا کو شفقت مادری سے محروم کر دیا گیا۔ اسی طرح ضلع کپوارہ کے ایک نہتے ٹیکسی ڈرائیور کو آصف اقبال کو جرم بے گناہی میں فوج نے قتل کردیا۔ حکومت کی جانب سے سرکاری ملازمین پر سوشل میڈیا پر پابندی عائد کرنے کے اعلان کو’ تاناشاہی‘ سے تعبیر کرتے ہوئے میرواعظ نے کہا کہ اظہار رائے پر پابندی سے جمہوریت کے دعوے کھلوے ثابت ہوتے ہیں۔