پیلٹ کا متبادل پلاسٹ گولی

نئی دلی// ہجوم کو قابوکرنے کیلئے فورسز کے ذریعے استعمال میں لائے جارہے پیلٹ بندوق کی ہلاکت خیزیوں پر سخت تنقید سامنے آنے کے بعد بھارت کی اعلیٰ دفاعی ایجنسی نے اب پلاسٹک گولیوں کا متبادل پیش کیا ہے ۔ٹرمنل بلاسٹک ریسرچ لیبارٹری چندی گڑھ کے ڈائریکٹر منجیت سنگھ نے کہاکہ ’’پلاسٹ گولیاں ہلاکت خیزی میں پیلٹ کی مناسبت سے 500 گنا کم ہے ۔اسے پر تشدد ہجومی مظاہروں کو قابو پانے کے دوران استعمال کیا جاسکتا ہے ۔مذکورہ لیبارٹری جسے گذشتہ برس مرکزی حکومت نے پیلٹ کا متبادل تیار کرنے کیلئے کہا تھا ،نے اب پلاسٹ گولیاں متبادل کے طور تیار کی ہیں ۔ڈیفنس ریسرچ و ڈیولپمنٹ آگنازیشن کے تحت کام کررہی اس لیبارٹری نے کہاہے کہ پیلٹ براہ راست جان نہیں لیتا ہے لیکن اس نے بہت سارے زخم خصوصا کشمیر میں بینائی چھیننے کیلئے کافی تنقید پائی ۔لیابرٹری کے ماہرین نے دعوی کیا ہے کہ پلاسٹ گولی سے کم نوعیت کے زخ  لگیں گے جس سے تھوڑا خون جسم سے باہر آئے گا لیکن اس سے گہری چوٹ نہیں لگے گی ۔ماہرین کے مطابق یہ گولی پیلٹ گن کے ذریعے ہی استعمال میں لائی جاسکتی ہے اور اس کیلئے صرف میگزین بدلنے کی ضرورت ہوگی۔فائرنگ کی آواز میں کوئی تبدیلی نہیں ہوگی۔ذرائع کے مطابق چندی گڑھ میں قائم لیبارٹری نے ابتدائی طور 1000گولیاں تیار کیں جن کا مرکزی ریزرو پولیس فورس نے سرینگر ٹرینگ سنٹر میں تجربہ کیا ۔پلاسٹ گولیوں کو اطمیان بخش پاکر دفاعی تحقیقی لیبارٹری نے اس کی100000گولیاں تیار کرکے انہیں ڈیفنس فیکٹری مہاراشٹرا کو کارٹریج و ڈیولری کیلئے ارسال کیں۔اس طرح کی10000گولیاں سی آر پی ایف کو سپلائی کی گئی ہیں