پیر پنچال میں گزشتہ دو ماہ میں 5انکائونٹر و متعدد دراندزی کی وارداتیں | فوج چوکس ، ملی ٹینسی کی دوبارہ بحالی کی کوششیں،ایجنسیوں نے خبر دار کیا

راجوری //خطہ پیر پنچال کے دونوں سرحدی اضلاع میں گزشتہ دو ماہ کے دوران فوج کی جانب سے 5انکائونٹر عمل میں لائے گئے جبکہ خطہ کے سرحدی علاقو ں میں دراندزی کی متعدد کوششیں کی گئی ہیں ۔سیکورٹی ایجنسیوں نے خبر دار کرتے ہوئے کہاہے کہ خطہ میں عسکریت پسندی کو دوبارہ سے بحال کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں ۔کشمیر عظمیٰ کے پاس موجود عداد و شمار کے مطابق سرحدی ضلع راجوری اور پونچھ میں گزشتہ دو ماہ کے دوران الگ الگ مقامات پر 5انکائونٹر ہوئے ہیں جن سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ دونوں سرحدی اضلاع میں ملی ٹینسی کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے ۔ان انکائونٹروں میں سے 6اگست کو تھنہ منڈی کے بھنگائی علاقہ میںہوئے انکائونٹر میں دوملی ٹینٹ ہلاک ہوئے تھے جبکہ 19اگست کو کریوٹ علاقہ میں ہوئے تصادم میں ایک عسکر یت پسند ہلاک ہوگیا تھا ۔30اگست کو پونچھ سیکٹر میں ہوئے ایک تصادم میں در اندازی کی کوششیں کرنے والے دو ملی ٹینٹ ہلاک ہوئے تھے ۔اسی طرح دو ستمبر کو فوج نے کرشنا گھاٹی علاقہ میں ملی ٹینٹوں کے ایک گروپ کی جانب سے دراندازی کی کوشش کو ناکام بناتے ہوئے ایک ملی ٹینٹ ہلاک ہوا تھا جبکہ گروپ میں شامل دیگر عسکریت پسند واپس چلے گئے تھے ۔خطہ میں 13ستمبر کو تحصیل منجا کوٹ کے گھمبیر مغلاں علاقہ میں ایک انکائونٹر کے دوران ایک ملی ٹینٹ ہلاک ہوگیا تھا اس کے علاوہ فوج کی جانب سے راجوری اور پونچھ کے سرحدی علاقوں میں دو دراندزی کی کوششیں بھی ناکام بنائی گئی ہیں ۔سرکاری ذرائع نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ حال ہی میں دونوں سرحدی اضلاع میں پیش آئے واقعات سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ ملی ٹینسی سے متعلقہ واقعات میں اضافہ ہو نا شروع ہو گیا ہے ۔انہوں نے کہاکہ ابھی تک فوج کی جانب سے مذکورہ کوششوں کو کامیابی کیساتھ ناکام بنایا گیا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ سرحدی علاقوں میں فوج کو متحرک کیا گیا ہے جبکہ حال ہی میں پیش آئے واقعا ت کے دوران بھاری مقدار میں اسلحہ بھی برآمد کرلیاگیاہے ۔