پٹھانہ تیر میں احتجاجی دھرنا جاری

 
 
مینڈھر//مینڈھر کے علاقہ پٹھانہ تیر کے لوگوں نے اپنے احتجاج کو جاری رکھتے ہوئے منگل کو بھی دھرنادیااوراس دوران سرکار کے خلاف نعرے بازی کرتے ہوئے مانگ کی کہ پٹھانہ تیر ہائی سکول کو فوری طور ہائر سکنڈری سکول کا درجہ دیا جائے۔واضح رہے کہ احتجاج کو دیکھتے ہوئے نیشنل کانفرنس قیادت نے ایک ٹیم تشکیل دی جو پانچ دن کے اندر ر پورٹ کرے گی کہ کس علاقے کا سکول کیلئے حق بنتاہے جس کے بعد حکومت سے معاملہ اٹھایاجائے گا۔اسی روزپی ڈی پی سینئر لیڈر ایڈووکیٹ محمد معروف خان بھی پٹھانہ تیر پہنچے تھے اورانہوں نے لوگوں سے بات چیت کرکے انہیں یقین دلایا کہ انہوںنے اس حوالے سے وزیر تعلیم سے بات کی ہے اور انہیں یقین ہے کہ پٹھانہ تیر کے ساتھ انصاف کیاجائے گا۔ تاہم اس کے باوجود لوگوںنے حکومت کے خلاف احتجاج رکھاہواہے اور ان کاکہناہے کہ یہ احتجاج سکول کے اعلان تک جاری رہے گا۔مظاہرین کاکہناتھاکہ پہاڑی پر بسنے والے طلباءدور دراز کے سکولوں میں کئی کلو میٹر پیدل سفر کرکے اپنی تعلیم جاری نہیں رکھ سکتے ۔ان کا کہنا تھا کہ اگر ڈنہ شاہستار میں ایک یونیورسٹی کھولی جا رہی ہے تو پھر پٹھانہ تیر میںہائر سکنڈری سکول کیوں نہیں قائم ہوسکتا۔انہوںنے کہاکہ حکومت اس سلسلے میں فوری طور پر اعلان کرے نہیں تو بڑے پیمانے پر احتجاج کیاجائے گااور امن وقانون کی صورتحال پید اہوجائے گا۔انہوںنے کہاکہ وزیر تعلیم خود آکر اس علاقے کا دورہ کریں اور یہ دیکھیں کہ ان کے ساتھ کس درجہ ناانصافی ہورہی ہے ۔