پٹواریوں کی ہڑتال نویں روز بھی جاری

 پونچھ+راجوری//آل جموں کشمیر پٹوار ایسوسی ایشن کی ریاست گیرہڑتال پر خطہ پیر پنچال میں بھی پٹواریوں کی طرف سے مسلسل نویں روز ہڑتال جاری رہی ۔ا س کام چھوڑ ہڑتال کی وجہ سے عام لوگ بری طرح سے متاثر ہورہے ہیں اوران کے کام نہیں ہورہے ۔ دونوں اضلاع میں پٹوار ایسوسی ایشن جموں و کشمیر کے بینر تلے تمام پٹواریوں نے ہڑتال جاری رکھی ہوئی ہے۔پٹواریوں کاکہناہے کہ وہ مطالبات پورے ہونے تک اپنا احتجاج جاری رکھیںگے ۔انہوںنے مانگ کی کہ ان کے گریڈ میں اضافہ کیاجائے،نائب تحصیلداروں کی براہ راست بھرتی پر پابندی عائد کی جائے ،ترقی دی جائے اور پٹوارخانوں کا کرایہ ادا کیاجائے ۔پونچھ کے صدر مقام پر پٹواریوں نے ایک بار پھر ریاستی مخلوط سرکار کے خلاف جم کر نعرے بازی کی ۔اس دوران ضلع صدر بشارت نقوی اور تحصیل صدرسلمان میر نے کہا کہ ان کے تسلیم شدہ مطالبات پورے نہیں کئے جارہے اور حکومت کی طرف سے وعدہ ایفا نہ ہونے کے بعد وہ احتجاج کرنے پر مجبور ہوئے ہیں۔انہوں نے انتباہ دیا کہ اگر ان کے تمام مطالبات پورے نہ ہوئے تو وہ اپنا احتجاج جاری رکھیں گے ۔وہیں راجوری ڈی سی دفتر کمپلیکس کے باہر احتجاج پر بیٹھے پٹواریوں نے کہا کہ ریاستی سرکارفوری طور پر ان ے مطالبات پورے کرے نہیں تو وہ احتجاج میں مزید شدت ائیںگے ۔ضلع صدر افتخار مرزا نے کہا کہ ریاستی سرکار پٹواریوں کی گریڈبڑھانے کے ساتھ پٹوارخانوں کا کرایہ مختص کرے اور براہ راست نائب تحصیلدار بھرتی پر پابندی عائد کی جائے ۔ انہوں نے کہا کہ وقت پورا کرچکے پٹواریوں کو ترقی دی جائے ۔وہیںسب ضلع کوٹرنکہ میں پٹواری اور گرداور پچھلے آٹھ دنوں سے لگاتار کام چھوڑ ہڑتال پر ہیں جس سے علاقہ کی عوام سخت مشکلات سے دوچار ہے۔پٹوار ایسوسی ایشن کے سب ضلع کوٹرنکہ کے صدر الطاف احمد تانترے نے کہا کہ یہ ریاست گیر ہڑتال ہے جوجائز مطالبات پورے ہونے تک جاری رہے گی ۔ انہوں نے کہا کہ ا ن کا تنخواہ گریڈ 2400 سے بڑھا کر 2800 کیا جائے ۔ان کاکہناتھاکہ اگر محکمہ تعلیم میں ماسٹر کی تقرری براہ راست نہیں ہے تو نائب تحصیلدار کی کیوں ہے اس لئے اس پر پابندی لگائی جائے ۔ انکا کہنا تھا کہ پٹوار حلقہ اور گرداور سرکل میں حدبندی کی جانی چاہئے ۔ضلع راجوری کے نوشہرہ اور منجاکوٹ علاقوں میں بھی پٹواریوں کی طرف سے ہڑتال جاری ہے ۔اس ہڑتال کی وجہ سے محکمہ مال کا نظام درہم برہم ہوچکا ہے اور لوگ پریشان حال ہیں ۔مقامی لوگوں کاکہناہے کہ سرکار کو چاہئے کہ وہ اس معاملے میں اپنا موقف واضح کرے اور انہیں اس ہڑتال کا شکارنہ بنایاجائے ۔انہوںنے کہاکہ ان کے وقت پر کام نہیں ہورہے اور پریشانیاں بڑھتی جارہی ہیں۔