پٹرولیم و اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں بے تحاشا اضافے کے خلاف اپوزیشن کا ہنگامہ

نئی دہلی//یو این آئی// کانگریس اور دیگر اپوزیشن جماعتوں نے پیر کو راجیہ سبھا میں پٹرولیم مصنوعات اور اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں مسلسل اضافے کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے ہنگامہ کیا جس کی وجہ سے ایوان کی کارروائی دو مرتبہ کے التوا کے بعد دن بھر کے لیے ملتوی کر دی گئی۔اپوزیشن کے احتجاج کے باعث ایوان کی کارروائی بار بار متاثر ہوتی رہی جس کے باعث وقفہ صفر اور وقفہ سوالات نہ ہوسکا۔اپوزیشن ارکان کیہنگامہ آرائی کے باعث ایوان کی کارروائی پہلے 12 بجے ، پھر 2 بجے اور بعد میں دن بھر کے لیے ملتوی کردی گئی۔جب ایوان دومرتبہ ملتوی ہونے اور وقفہ طعام کے بعد دوبارہ شروع ہوا تو ڈپٹی چیئرمین سسمیت پاترا نے وزیر محنت و روزگار بھوپیندر یادو سے کہا کہ وہ وزارت محنت کے کام کے بارے میں بحث کا جواب دیں۔ دریں اثنا ترنمول کانگریس کے ڈیرک اوبرائن نے انتظامات پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ انہوں نے قاعدہ 168 کے تحت نوٹس دیا ہے اور مطالبہ کیا ہے کہ کئی سالوں سے زیر التوا خواتین ریزرویشن بل کو ایوان میں لایا جائے اور اس ہفتے منظور کیا جائے ۔ ڈپٹی چیئرمین نے اس کے بعد مسٹر یادو سے جواب شروع کرنے کو کہا لیکن اسی دوران کانگریس، بائیں بازو کی پارٹیوں اور ترنمول کانگریس کے ارکان چیئرکے قریب آگئے ۔ راشٹریہ جنتا دل، ڈی ایم کے اور عام آدمی پارٹی کے ارکان اپنی جگہ کھڑے رہے ۔اراکین ڈپٹی چیئرمین سے مہنگائی کے معاملے پر بات کرنے کا مطالبہ کر رہے تھے ۔