پونچھ کو پسماندگی کی جانب دھکیلنے کی کوشش :وکلا

پونچھ// صدر بار ایسوسی ایشن پونچھ ایڈ وکیٹ معروف خان ودیگر وکلاء نے کہا کہ پہلے سے ہی بنیادی سہولیات کی قلت کا سامنا کررہے ضلع پونچھ کو اب حد بند کمیشن کی جانب سے مزید پسماندگی کی جانب دھکیلنے کی کوششیں کی گئی ہیں ۔ صدر بار ایسوسی ایشن پونچھ ایڈوکیٹ معروف خان نے کہا ہے کہ پونچھ کے لوگوں کو پہلے ہی گوناگوں مسائل کا سامنا تھا تاہم حالیہ حد بندی کمیشن کی رپورٹ نے پونچھ کو مزید پسماندگی کی طرف دھکیلنے کوئی کمی نہیں چھوڑہے۔ انہوں نے کہا کہ کمیشن نے جو رپورٹ پیش کی ہے وہ ایک فریق کے حق میں ہے۔ پی ڈی پی لیڈر جاوید چودھری نے کہا ہے کہ راجہ سکھدیو سنگھ ضلع پونچھ کی حالت جموں و کشمیر کے ہسپتالوں میں سب سے زیادہ خراب ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس ہسپتال میں ماہرسرجن، میڈیکل آفیسرز کی کمی ہے، دیگر انفراسٹرکچر کی بھی کمی ہے۔انہوں نے کہا کہ یہی وجہ ہے کہ یہاں کے لوگوں کو جموں میں علاج معالجہ کیلئے جانے پر مجبوراًہو جاتے ہیں ۔ ایڈووکیٹ دیراج کور نے کہا ہے کہ 2014 کے سیلاب میں جو سرکاری املاک ضائع ہوئی تھیں، وہ ابھی تک بحالی کے منتظر ہیں۔ انہوں نے کہا، درنگلی نالہ پل، بیٹر نالہ پل انتظامیہ کی ناکامی کی دو بڑی مثالیں ہیں۔ان سبھی وکلاء اور سماجی و سیاسی کارکنان نے کہا ہے کہ جموں وکشمیر حکومت کیساتھ ساتھ بھاجپا کی قیادت والی مرکزی حکومت سرحد ی ضلع کی عوام کو بنیادی سہولیات اور ان کی مانگوں کو پوار کرنے میں پوری طرح سے ناکام ہو گئی ہے ۔انہوں نے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ عوام کو بنیادی سہولیات فراہم کرنے کیساتھ ساتھ حدبندی کمیشن کی تجویز کو مسترد کیا جائے تاکہ عوامی امنگوں کے تحت اسمبلی حلقوں کی حد بندی ہو سکے ۔