پونچھ عدالت میں زیر سماعت قتل کیس کاملزم بری

پونچھ//ضلع عدالت پونچھ میں زیر سماعت قتل کیس کے ملزم کو پرنسپل ضلع سیشن جج پونچھ زبیر احمد رضا نے عدم ثبوت پر باعزت بری کرنے کا فیصلہ سنایا ہے۔تفصیلات کے مطابق3اگست 2014کو پولیس تھانہ مینڈھر میں ذاکر حسین ولد عبدالمجید ساکن ڈھرانہ تحصیل مینڈھرکے خلاف شکایت درج کرائی گئی کہ اس نے اپنی ہی8سالہ بیٹی جس کا نام مسرت ناز تھا کو قتل کر دیا ہے ۔اس سلسلہ کی اطلاع ملتے ہی پولیس تھانہ مینڈھر میں زیرنمبر116/2014زیر دفعہ302آر پی سی ایف آئی آر درج کر کے ملزم ذاکر حسین کو حراست میں لیا جس کے بعد پولیس نے اپنی تحقیقات مکمل کی اور عدالت میں چالان داخل کیا ۔کیس عدالت میں تقریبا ساڑھے چار سال زیر سماعت رہا۔اس دوران ایڈوکیٹ ضلع اور سیشن کورٹ پونچھ ابرار حسین شاہ مبینہ طور پر ملزم کی پیروری کر رہے تھے جب کہ ریاست کی طرف سے عوامی پراسیکیوٹر مختار احمد شیخ کیس کی نمائندگی کر رہے تھے۔اس دوران پرااسیکیوشن نے 53 گواہوں کو ملزم کے خلاف جرم ثابت کرنے کے لئے پیش کیاجبکہ ایڈوکیٹ ابرا حسین شاہ کی جانب سے بھی دفاعی ثبوت پیش کئے جاتے رہے آخرکارپرنسپل ضلع سیشن جج پونچھ زبیر احمد رضا نے اپنا فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ تمام ثبوتوں ،گواہوں اور وکلاءکے دلائل کے بعد عدالت اس نتیجے پر پہنچی ہے کہ پراسیکیوشن اس کیس کو ثابت کرنے میں ناکام ثابت ہوا ہے اس لئے عدالت ملزم پر لگائے گئے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے ملزم کو باعزت بری کرتی ہے۔