پولیس نے بٹوت سے رام بن تک ترنگا ریلی نکالی

عظمیٰ نیوز سروس
رام بن// “میری ماں، میرا دیش” کی پہل کے تحت “آزادی کا امرت مہوتسو” کی تقریبات کو یادگار بنانے کے لیے ضلع پولیس رامبن نے بٹوت سے رام بن تک پیر کی شام ایک ترنگا ریلی کا اہتمام کیا۔اس تقریب کی صدارت ڈی آئی جی ڈی کے آر رینج نے کی اور اس میں موہتا شرما ایس ایس پی رام بن کے ساتھ ضلع پولیس رام بن کے افسران اور جوانوں نے بھی شرکت کی۔ریاض تانترے ایس پی کی سربراہی میں IRP سولہ بٹالینکے افسران اور جوان بھی اس تقریب میں شامل ہوئے۔اس کے علاوہ علاقہ بٹوٹ کے معزز شہری بھی ترنگا ریلی میں شامل ہوئے۔ ترنگا ریلی کو ڈی آئی جی ڈی کے آر رینج نے ڈاک بنگلہ سے جھنڈی دکھا کر حب الوطنی اور قوم پرستی کا پیغام عام کرنے کے لیے بڑے جوش و خروش کے ساتھ روانہ کیا۔یہ ریلی شام دیر گئے رام بن میں اختتام پذیر ہوئی۔

قوم شہیدوں اور سرفروشوں کی مقروض ہے: رانا
عظمیٰ نیوز سروس
نگروٹہ // بی جے پی کے سینئر لیڈر دیویندر سنگھ رانا نے اپنے مادر وطن کی سالمیت اور خودمختاری کے دفاع کے لیے شہیدوں کی بہادری کو سلام پیش کرتے ہوئے کہا کہ قوم ہمیشہ ان کی عظیم قربانیوں کی مقروض رہے گی۔ شہدا کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے رانا نے کہا کہ عظیم جنگجو نے بہادر ڈگرلینڈ کو قومی فخر کے ساتھ اپنی وابستگی سے قابل فخر بنا دیا ہے۔ انہوں نے منتروں کے جاپ کے درمیان شہید کے مجسمے کو دودھ سے صاف کیا۔ رانا نے شہید کی 87 سالہ اہلیہ چنچل دیوی سے بھی ملاقات کی اور ان کے پاؤں دھوئے اور صاف کئے۔ انہوں نے اپنے بڑے بیٹے رام کرشن، ان کی اہلیہ انجنا شرما اور چھوٹے بیٹے اجے کمار شرما، ان کی اہلیہ روہنی شرما سے بھی میری مٹی میرا دیش ابھیان کے ایک حصے کے طور پر نگروٹا کے بلاک بھلوال میں ان کی رہائش گاہ سری پنڈتا سے ملاقات کی۔ اس موقع پر جمع ہونے والے مقامی لوگوں کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے رانا نے کہا کہ “بہادر لوگ اپنا آج ہمارے محفوظ اور محفوظ کل کے لیے دیتے ہیں۔”رانا نے کہا کہ قوم کی سالمیت اور خودمختاری کے دفاع میں ہیروز کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی۔ انہوں نے کہا کہ مقروض قوم اپنے سرفروشوں کی قربانیوں کے لیے ہر وقت عزت اور احترام کے ساتھ سر جھکائے ہوئے ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ شہداء نسلوں کو مادر وطن کی خدمت کے لیے تحریک دیتے رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ بہادروں کی شہادت ہمیں امن کے لیے کام کرنے اور انسانیت کے بہتر مستقبل کی تشکیل کے لیے جدوجہد کرنے کی اہم ضرورت کی یاد دلاتی ہے۔ عظیم ہیروز کو سب سے بڑا خراج عقیدت ایک ایسی دنیا بنانا ہے جہاں لوگ واسودیو کٹمبکم کے ہندوستانی فلسفے کی حقیقی روح کے ساتھ امن اور ہم آہنگی کے ساتھ رہیں۔

سی آر پی ایف کی طرف سے شاہراہ پر ترنگا ریلی کا انعقاد
محمد تسکین
بانہال // سی آر پی ایف 166 بٹالین کی طرف سے جموں سرینگر قومی شاہراہ پر واقع بانہال میں ایک میگا ترنگا یاترا ریلی کے ساتھ ساتھ میری ماٹی میرا دیش پروگرام کا انعقاد کیا گیا۔اس ترنگا یاترا ریلی کا آغاز جموں سرینگر قومی شاہراہ پر واقع ریلوے چوک بانہال سے گنڈ مارکیٹ تک اور واپس نویگہ ٹنل پر اس ریلی کا اختتام ہوا۔ترنگا یاترا ریلی کی قیادت سی آر پی ایف 166 کے کمانڈنٹ ہرگیان سنگھ گوجر کر رہے تھے جبکہ اس موقع پر سی آر پی یونٹ کے افسران اور جوان بھی موجود تھے۔جبکہ سرکردہ شہریوں کے علاوہ ایس ڈی پی او، ایس ایچ او بانہال، ڈی ایس پی ٹریفک بانہال نے بھی ترنگا یاترا میں شرکت کی۔ترنگا یاترا ریلی میں سینکڑوں لوگوں، طلباء ، پولیس، سی آر پی ایف اور پنچایتی نمائندوں نے شرکت کی۔ہاتھوں میں ترنگا اٹھائے شرکاء میں جوش و خروش تھا اور وہ حب الوطنی کے نعروں کے ساتھ آگے بڑھ رہے تھے۔دریں اثناء ٹریفک پولیس نے بانہال میں ترنگا ریلی نکالی اور اس کی قیادت ڈی ایس پی ٹریفک نیشنل ہائے وے بانہال محمد اصغر ملک کر رہے تھے جبکہ پولیس اور انتظامیہ کی طرف سے کھڑی میں بھی جشن آزادی اور میری مٹی میرا دیش کے تحت پروگراموں کا انعقاد کیا گیا ۔

جموںمیں بھاجپا کی ترنگا ریلی
ڈاکٹر فاروق عبداللہ کو پہلے اپنے گھر میں ترنگا لہرانا چاہئے: رویندر رینہ
عظمیٰ نیوز سروس
جموں// بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے جموں و کشمیر یونٹ نے پیر کے روز جموں میں ترنگا ریلی نکالی۔ریلی میں شرکت کر رہے لیڈروں اور کارکنوں نے اپنے ہاتھوں میں ترنگے اٹھائے تھے اور وہ بھارت ماتا کی جئے وغیرہ جیسے نعرے لگا رہے تھے۔اس موقع پر یونٹ کے صدر رویندر رینہ نے میڈیا کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا کہ جموں و کشمیر کا ہر باشندہ ہندوستانی ہے اورہر شخص کے دل میں ترنگا ہے۔انہوں نے کہا: ‘یہاں ہر شخص کے دل میں ترنگا ہے چند شرارتی ہیں جنہوں نے یہاں بندوق کی دکانیں کھولی تھیں لیکن ان دکانیں بند ہوگئی اور اب یہاں صرف ترنگا ہے’۔ڈاکٹر فاروق عبداللہ کے بارے میں پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا: ‘ڈاکٹر فاروق کو اپنے گھر پر ترنگا لہرانا چاہئے اور ہندوستان زندہ باد کا نعرہ لگانا چاہئے باقی باتیں بعد میں ہوں گی’۔ایک اور لیڈر نے بتایا کہ وزیر اعظم نریندر مودی جی کی تئیں لوگوں میں مقبولیت بڑھ رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ ملک میں ہر گھر میں ترنگا لگایا جا رہا ہے اور ترنگا ریلی نکالی جا رہی ہیں تاکہ ملک کے تحفظ کے لئے قربانیاں پیش کرنے والوں کو یاد کیا جائے۔ان کا کہنا تھا کہ کشمیر میں بھی جوش و جذبے کے ساتھ ترنگا جھنڈا لہرایا جا رہا ہے اور ترنگا ریلیاں نکالی جا رہی ہیں۔

۔1999 کی کرگل جنگ میں بھارتی فوجیوں نے پاکستان کو شکست دی :چُگ
ترنگا مارچ نکال کرکرگل کی بلند پہاڑی پر ترنگا لہراکر فتح کو یاد کیاگیا
عظمیٰ نیوز سروس
کرگل// کرگل کی ہندرامن درگام نکولی کی پہاڑیوں پر جہاں 1999 میں فوج کے ہمارے بہادر سپاہیوں نے پاکستانی فوج کے دانت کھٹے کئے تھے،اسی پہاڑی پر کھڑے ہو کر بی جے پی کے جنرل سکریٹری ترون چْگ نے کہا کہ ملک کے وزیر اعظم نریندر مودی نے 30 جولائی کو ‘من کی بات’ پروگرام کے 103 ویں ایڈیشن کے دوران ‘میری مٹی میرا دیش’ مہم کا اعلان کیا تھا۔ اس مہم کے ایک حصے کے طور پر ترنگا یاترا نکالی گئی اور کرگل کے ہندر مین دور دراز پہاڑی پر ترنگا لہرایا گیا جہاں ہمارے ملک کے بہادر سپاہیوں نے 1999 میں دنیا کی سب سے مشکل جنگ لڑی تھی اور جیتی تھی۔چگ نے کہا کہ یہ ناقابل رسائی چوٹیاں پاکستان نے اپنے قبضے میں لے لی تھیں لیکن بھارتی فوج کے بہادر جوانوں نے تیز پہاڑوں، ناقابل رسائی چڑھائی، آکسیجن کی کمی کے باوجود پاکستانی فوج کو اپنی ہمت اور بلند ارادوں سے شکست دی اور دانت کھٹے کر دئیے۔ وہاں ہندوستان کا ترنگا جھنڈا لہرایا گیا۔ آج یہ پہاڑیاں ہمارے محافظ ہیں اور ہمارے بہادر سپاہی وہاں محافظ بن کر بیٹھے ہیں۔چگ نے کہا کہ اس وقت کے وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی خود بھی اس جگہ پر آئے تھے اور بہادر فوجیوں کی حوصلہ افزائی کی تھی۔ آج مجھے کرگل کی اس انتہائی دور افتادہ اور مقدس چوٹی کو دیکھنے کا موقع ملا، یہ میرے لیے خوش قسمتی ہے۔انہوں نے کہا کہ یہاں ہندوستانی فوجیوں نے ملک کی حفاظت کے لیے اس جنگ میں اپنے خون کا آخری قطرہ بھی قربان کیا تھا۔ خون جما دینے والی سردیوں میں بھی ہمارے فوجی ہندوستانی سرحدوں کی حفاظت کرتے ہیں تاکہ ہمارے ملک کا ہر شہری محفوظ محسوس کرے۔