پولیس حراست میں منشیات فروش کی مشکوک حالت میں موت

کشتواڑ//ضلع کشتواڑ کے پولیس تھانہ چھاترو میں منشیات سمگلر کی مشکوک حالات موت ہو گئی ہے۔ پولیس ذرائع نے بتایا کہ 26فروری کو پولیس تھانہ چھاترو نے منشیات سمگلر عبدالطیف ولد محمد رمضان ساکنہ پارنہ چنگام کو گرفتار کرکے اسکے قبضے سے 9کلو 800گرام چرس جیسا مواد برآمد کیا تھا اور اسے ایف آئی آر زیر نمبر 18/2022این ڈی پی ایس کے تحت درج کر کے گرفتار لیا تھا۔ پولیس نے مزیدبتایا کہ اسے دس روز کی ریمنانڈ پر لیا گیا تھا۔ سوموار کو اسکی ریمانڈ کی مدت ختم ہورہی تھی۔ پولیس کے مطابق اتوار کی دیررات چھاترو تھانہ کے اندر حوالات میں ہی اس نے کمبل سے خودکشی انجام دی جسکے بعد اسے پولیس نے پی ایچ سی چھاترو منتقل کیا جہاں ڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دیا۔پولیس کا کہنا ہے کہ قانونی لوازامات کو مکمل کرنے کے بعد اسکی نعش کو اخری رسومات کیلئے ورثاکے حوالے کردیاگیا۔واضح رہے کہ عبدالطیف تین بچوں کا واحد سہارا تھا۔وہیں ضلع انتظامیہ نے اسکی جوڈیشل انکوائری کے احکامات صادر کئے ہیں جبکہ ایس ڈی ایم کو مڑواہ کو انکوایری افسرتعینات کیا گیا ہے۔ ضلع ترقیاتی کمشنرکشتوارڑ کی جانب سے جاری کئے گئے حکمنامے کے مطابق اصل حقائق جاننے کیلئے اسکی مجسٹریل انکوائری کے احکامات جاری کیے اور ایس ڈی ایم مڑواہ محسن رضا کو انکوایری افسرتعینات کیا گیا ہے۔انھیں تحقیقات مکمل کرکے پندرہ روز کے اندر رپورٹ پیش کرنے کو کہا گیا ہے۔