پوش محلہ حبہ کدل آوارہ کتوں کی آماجگاہ میں تبدیل

 سرینگر // پوش محلہ حبہ کدل میں آوارہ کتوں کی ہڑبونگ کی وجہ سے مقامی لوگوں کا جینا محال ہوگیا ہے۔ مقامی لوگوں نے بتایا کہ علاقے میں آوارہ کتوں کی بڑھتی ہوئی تعداد کی وجہ سے بچوں ، بزرگوں اور خواتین کا گھروں سے نکلنا مشکل بن گیا ہے۔ پوش محلہ حبہ کدل سرینگر کے رہنے والے فاروق احمد نے کشمیرعظمیٰ کو بتایا کہ علاقے میں آوارہ کتوں کی بڑھتی ہوئی تعداد کی وجہ سے لوگ کافی پریشان ہے اور علاقے میں بچوں ، بزرگوں اور خواتین کا چلنا پھرنا مشکل بن گیا ہے۔ فاروق احمد نے بتایا کہ شام اور صبح کے وقت گھروں سے باہر آنامشکل ہوگیا ہے جسکی وجہ سے لوگ وقت پر نماز ادا کرنے سے بھی قاصر ہے۔ فاروق احمد نے بتایا کہ علاقے میں رہنے والے مریضوں علاج و معالجے کیلئے گھر سے باہر آنے میں ڈر لگتا ہے کیونکہ علاقے میں موجود آوارہ کتے لوگوں پر حملے کررہے ہیں جبکہ کتوں کے ڈر سے بچوں نے گھر سے باہر آنا بھی بند کردیا ہے۔