پنڈت تاجروں کا وفد ڈاکٹر فاروق سے ملاقی،گپکار اعلامیہ کی مکمل حمایت کااظہار

سرینگر//نوجوان پنڈت کاروباریوں کے ایک وفد نے نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ کے ساتھ رہائش گاہ پر ملاقات کی۔ اومیش تلاشی کی سربراہی میں ملاقی ہوئے وفد نے گپکار اعلامیہ کو مکمل حمایت دینے اور اتحاد کا اعلان کیا۔ وفد میں سمیر کول، پی ایل تلاشی، ایس کے بھٹ، ساحل کول اور متعدد نوجوان شامل تھے جبکہ اس موقعے پر پارٹی کے معاون جنرل سکریٹری ڈاکٹر شیخ مصطفیٰ کمال اور ترجمان عمران نبی ڈار بھی موجود تھے۔ اس دوران جموں وکشمیر کی موجودہ صورتحال اور 5اگست2019کے بعد کے حالات پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ وفد نے جموں وکشمیر کی انفرادیت، شناخت اور پہچان کیلئے خصوصی پوزیشن کی بحالی کیلئے گپکار اعلامیہ کو مکمل حمایت اور اتحاد کا اظہار کیا ۔ وفد نے جگتی ٹائون شپ میں انتظامیہ کی ناکامی اور کووڈ صورتحال کے دوران حکام کی نااہلی کی تفصیلات پیش کیں۔ انہوں نے کہا کہ جگتی ٹائون شپ میں مہاجر پنڈت پانی کی بوند بوند کیلئے ترس رہے ہیں جبکہ شدید گرمی کے دوران بھی دیگر بنیادی سہولیات کا بھی فقدان ہے۔ وفد نے کہا کہ مہاجر کشمیری پنڈتوں کو آیوشمان بھارت سکیم کے دائرے میں لایا جانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ افسوس کی بات ہے کہ ویسو میں ملازمین کیلئے تعمیر شدہ کوارٹروں کو بی جے پی ورکروں اور عہدیداروں کو فراہم کئے گئے ہیں اور انہوں نے مطالبہ کیا کہ یہ رہائشی کواٹر مہاجر کشمیری پنڈت ملازمین کو الاٹ کئے جانے چاہئیں۔ڈاکٹر فاروق نے گپکار اعلامیہ کو حمایت دینے پر پنڈت نوجوانوں کا شکریہ ادا کیا اور یقین دہانی کرائی کہ وہ اور نیشنل کانفرنس کے دیگر 2اراکین پارلیمان مہاجر پنڈتوں کو درپیش تمام مشکلات متعلقہ حکام تک پہنچائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پنڈت جموں وکشمیر کی پہچان اور شناخت کا لازم و ملزوم حصہ ہیں اور نیشنل کانفرنس کی حکومتوں کے دوران مہاجر پنڈتوں کی فلاح و بہبود کیلئے جتنا کام کیا گیا اُتنا کسی اور نے نہیں کیا۔