پنچایتی انتخابات کا نو ٹیفکیشن12جنوری کو، بلدیاتی چنائو فروری کے فوراً بعد

 جموں //جموں کشمیر میں پنچایتی انتخابات کے انعقاکا باضابطہ نوٹیفکیشن12جنوری 2018کو جاری کی جارہی ہے۔اس دوران وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے پنچایتی الیکشن کے فوراًبعدبلدیاتی اداروں کے انتخابات منعقد کرانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ ا س کا مقصد بنیادی جمہوری اداروں کوہر سطح پر بااختیار بنانا ہے۔وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے حال ہی میں گورنر این این ووہرا کے ساتھ ملاقات کے دوران انہیں حکومت کے اس فیصلے سے آگاہ کیا کہ ریاست میں طویل عرصے سے التواء میں پڑے پنچایتی انتخابات فروری 2018میں منعقد کرائے جائیں گے۔قابل ذکر ہے کہ ریاست میں گزشتہ پنچایتی الیکشن سال2011جبکہ بلدیاتی اداروں کے انتخابات سال2005میں منعقد کرائے گئے تھے۔ ریاست میں پنچایتی انتخابات کے انعقاد سے متعلق باضابطہ نوٹیفکیشن 12جنوری2018کو جاری کی جارہی ہے۔ریاست کے چیف الیکٹورل آفیسر رسمی طور نوٹیفکیشن جاری کریں گے اور انتخابات کا انعقاد فروری کے وسط میں متوقع ہے۔ادھر وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے ہفتے کو کئی عوامی وفود کے ساتھ ملاقات کے دوران یہ بات دہرائی کہ ریاست میں پنچایتی اور بلدیاتی انتخابات کے انعقاد سے نچلی اور بنیادی سطح کے ان اداروں کو با اختیار بنانا حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے۔ اس ضمن میں ان کا کہنا تھا’’حکومت نے جون 2016میں اسمبلی کے ایوان میں اس بات کا وعدہ کیا تھا کہ اربن لوکل باڈیز کے انتخابات بہت جلد منعقد کئے جائیں گے جس سے ان اداروں کو مکمل طور با اختیار بنانا یقینی ہوجائے گا۔انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ فروری2018 میں منعقد کرائے جارہے پنچایتی الیکشن میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں۔محبوبہ مفتی کا کہنا تھا’’پنچایتی الیکشن کے بعد بلدیاتی اداروں کے انتخابات منعقد کرائے جائیں گے تاکہ ان بنیادی جمہوری اداروں کو مضبوط اور با اختیار بنایا جائے‘‘۔ وزیر اعلیٰ نے بتایا کہ پنچایتی اور بلدیاتی انتخابات کے انعقادسے ان اداروں کو نہ صرف جمہوری طاقت حاصل ہوگی بلکہ ان کے پاس بنیادی سطح کی ترقیاتی سرگرمیاں انجام دینے کیلئے مالی اختیارات بھی ہونگے۔انہوں نے مزید کہا کہ یہ جمہوری ادارے ریاست کی کلہم ترقی کے ایجنڈا کو لوگوں کے تمام طبقوں تک پہنچانے میں اہم کردار ادا کرسکتے ہیں۔وزیر اعلیٰ نے کہا کہ جموں کشمیر پنچایتی راج ایکٹ کے تحت جب محکمہ دیہی ترقی الیکشن کمیشن سے درخواست کرے گا تو الیکشن حکام پنچایتی الیکشن منعقد کرنے کے عمل کا رسمی طور آغاز کریں گے۔