پلوامہ کے شہری پر سیفٹی ایکٹ کالعدم

سرینگر// جموں کشمیر ہائی کورٹ نے2018میں جنوبی کشمیر کے پلوامہ سے تعلق رکھنے والے ایک نوجوان پر عائد پی ایس اے کو کالعدم قرار دیا۔ نثار احمد قاضی ساکن ٹکن پلوامہ پر عائد پی ایس ائے معاملے میں سنگل بنچ احکامات کو یک طرف کرکے جسٹس سنجیو کمار اور جسٹس راجنیش اوسوال کی سربراہی والے ڈبل بینچ نے قاضی پر عائد پی ایس کو منسوخ کیا۔ نظار احمد قاضی نے ایڈوکیٹ جی این شاہین کی وساطت سے سنگل بینچ جج کے احکامات کو ڈبل بینچ میں چلینج کرنے کیلئے اپیل کی تھی،جس میں نظربند رکھنے والے حکام کے ان بنیادوں پر اعتراض کیا تھا کہ انہیں(حکام)کو معلوم  ہے کہ نظربند اس وقت پہلے ہی جیل میں تھا اور ضمانت کیلئے عدالت کا دروازہ نہیں کھٹکھٹایا تھا۔