پلوامہ کے بعد چیک چولان شوپیان میں جنگجوﺅں اور سیکورٹی فورسز کے مابین تصادم آرائی

پلوامہ// وادی کشمیر میں جنگجو مخالف آپریشنوں میںتیزی کے بیچ پہاڑی ضلع شوپیان کے چیک چولان علاقے میں سیکورٹی فورسز اور جنگجوﺅں کے مابین مسلح تصادم آرائی میں تین جنگجو جاں بحق ہو گیا ہے ۔
 پولیس نے جھڑپ میں تین جنگجوﺅں کی ہلاکت کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ علاقے میں آپریشن جاری ہے ۔تفصیلات کے مطابق چیک چولان شوپیان نامی گاﺅں میں دو سے تین جنگجوﺅں کی موجودگی کی مصدقہ اطلاع ملنے کے بعد فوج ، سی آ ر پی ایف اور ایس او جی نے علاقے کو بدھ کی اعلیٰ الصبح محاصرے میں لیا اور تلاشی کارورائی شروع کر دی ۔ 
ذرائع سے معلو م ہوا ہے کہ بدھ کی اعلیٰ الصبح جونہی علاقے میں تلاشی آپریشن شروع کر دیا گیا تو وہاں موجود جنگجوﺅں نے فرار ہونے کی کوشش کی اور فوج و فورسز پر شدید فائرنگ کی ۔ ذرائع کے مطابق علاقے میں فائرنگ شروع ہوتے ہی فوج و فورسز نے مورچہ زن ہوکر جوابی کارروائی کی اور اس طرح سے علاقے میں دو بددو جھڑپ شروع ہوئی ۔ 
ذرائع کے مطابق جھڑپ شروع ہونے کے ساتھ ہی گولیوں کی گن گرج سے پورا علاقہ لرز اٹھا جبکہ فوج و فورسز نے پورے علاقے کو سیل کرکے جنگجوﺅں کے فرار ہو نے کے تمام راستے سیل کر دئے اور فوج کی اضافی کمک طلب کرکے آپریشن کو وسیع کر دیا گیا ۔ اسی دوران ذرائع سے معلو م ہوا ہے کہ رہائشی مکان میں محصور جنگجوﺅں کو خود سپردگی کرنے کی پیشکش کی گئی تاہم انہوں نے پیشکش ٹھکرادی اور فائرنگ کی جس کے ساتھ ہی علاقے میں جھڑپ دوبارہ شروع ہوئی ۔
 ذرائع کے مطابق علاقے میں طرفین کے مابین گولیوں کا تبادلہ قریب آدھے گھنٹے تک جاری رہا جس کے بعد جونہی علاقے میں گولیوں کا تبادلہ تھم گیا تو جھڑپ کے مقام سے ایک جنگجو کی نعش بر آمد کر لی او ر ان کے قبضے سے اسلحہ و گولہ بارود بھی ضبط کر لیا گیا ۔جس کے بعد علاقے میں جھڑپ دوبارہ شروع ہوئی اور کچھ گھنٹوں کی فائرنگ کے بعد علاقے میں مزید دو جنگجوﺅں کی نعشیں بر آمد کر لی گئی جس کے ساتھ جھڑپ میں تین جنگجو جاں بحق ہو گئے ۔
 پولیس کے ایک سنیئر آفیسر نے جھڑپ کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ محاصرے میں موجود جنگجووں کو سرنڈر کرنے کی پیشکش کی گئی جو انہوں نے ٹھکراکر فورسز پر گولیاں چلائیں۔انہوں نے بتایا کہ جھڑپ کے دوران تین جنگجو مارا گئے ۔ جن کا تعلق تنظیم ٹی آر ایف سے تھا ۔ پولیس کے مطابق علاقے میں ابھی تک آپریشن جاری ہے ۔