پروجیکٹ متاثرین کی آبادکاری اولین ترجیح: فردوس ٹاک

جموں //ضلع کشتواڑ میں دریائے چناب پر تعمیر ہو رہے متعدد پروجیکٹوں سے متاثرین کی باز آباد کاری کا مطالبہ کرتے ہوئے ایم ایل سی فردوس ٹاک نے کہا ہے کہ انہیں بتایا گیا ہے کہ پکل ڈول، ،کئیرو، کواڑ پائور پروجیکٹوں پر کام شروع کرنے سے قبل ریاستی کابینہ کے مناسب بازآباد کاری پروجیکٹ کے فیصلہ کو لاگو کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ پہلے بار ریاستی کابینہ نے پروجیکٹوں کے متاثرین کیلئے باز آباد کاری  پیکیج کا اعلان کیا ہے ۔ٹاک نے کہا کہ یہ متاثرین خصوصی پیکیج کے حقدار ہیں۔وہ جمعہ کے روز ضلع کشتواڑ کے دچھن علاقہ سے آئے ہوئے معزز سیاسی کارکنوں کی ایک تقریب سے خطاب کر رہے تھے ،جن کی قیادت ریٹائرڈ لیکچرار سومناتھ ٹھاکور کر رہے تھے اور جنھوں نے پی ڈی پی میں شمولیت اختیار کی ۔ شمولیت اختیار کرنے والوں میں ڈاکٹر بی کے ٹھاکور، کنج لعل ٹھاکور، راج کمار، سیواڑ چند، سکھ رام ، علی محمد، اختر حُسین شامل تھے۔اس موقعہ پر پارٹی کے ضلع صدر شیخ ناصر حُسین، ریاستی سیکرٹری عُمر ملک، سجاد احمد دیو، جعفر حُسین بابزادا،گردھاری لعل، نذیر احمد، شانتی کول، محمد رمضان ،عبدالوحید، محمد اقبال بھی موجود تھے۔ایم ایل سی نے تین پروجیکٹوں کا کام الاٹ کرنے پر ضلع کشتواڑ کے عوام کو  مبارک باد دی اور اس توقع کا اظہار کیا کہ عنقریب ہی ان پر کام شروع کیا جائے گا۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بہت سی طاقتیں موجودہ مخلوط سرکار کے غیر مستحکم کرنا چاہتی ہیں ۔انہوں نے کہا کہ اپوزیشن پارٹیوں نے اقتدار دوبارہ حاصل کرنے میں کشمیر میں خرمن امن م،یں آگ لاگانے میں کوئی کسی نہیں چھوڑی لیکن یہ وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی کاوشوں کا اثر ہے کہ وادی کشمیر میں حالات تیزی سے معمول کی جانب آ رہے ہیں۔ان ہوں نے کہا کہ پی ڈی پی نے نہ صرف عوام دوسر اور کل ہُم ترقی یقینی بنائی ہے بلکہ ریاست جموں و کشمیر میںسیاسی نظام کو ایک قانونی حیثیت بھی مہیا کی ہے۔انہوں نے کہا کہ این سی حُکمرانی کے دوران ریاست کو اندھیرے میں دھکیلا گیا تھا اور سیاسی خلاء پیداکیا تھا ۔ٹاک نے مزید کہا کہ یہ پی ڈی پی کی سخت محنت کا ثمر ہے کہ لوگوں کا سیاسی و جمہوری نظام میں اعتماد بحال ہوا ہے۔