پرائیویٹ کوچنگ

سرینگر//ریاست کے وزیرتعلیم سید الطاف بخاری نے کہا ہے کہ سرکاری اسکولوں کے اساتذہ کی پرائیوٹ کوچنگ مراکزپرپڑھانے پر کوئی پابندی نہیں ہے اور اساتذہ دفتری اوقات کے بعد کہیں بھی پڑھاسکتے ہیں اوراس کیلئے انہیں حکومت سے کوئی اجازت نامہ حاصل کرنے کی ضرورت نہیں ہے کیونکہ حکومت نے اس عمل پر کوئی پابندی عائد نہیں کی ہے۔ وزیر تعلیم نے کہا کہ سرکاری اساتذہ کو صرف دفتری اوقات کے دوران پرائیویٹ کوچنگ سینٹروں میں نہیں پڑھا ناچاہئے دفتری اوقات کے بعدسرکاری ساتذہ کی طرف سے پرائیویٹ کوچنگ سینٹروں میں پڑھانے پرحکومت کو کوئی اعتراض نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ بات انتہائی ناشائستہ ہے اگر ہم اساتذہ کو علم کانور پھیلانے کیلئے حکومت سے اجازت حاصل کرنے کو کہیں گے تاہم انہیں حکومت کو اپنی تدریسی سرگرمیوں کے بارے میں مطلع رکھنا چاہئے۔ وزیر تعلیم نے کہا کہ پہلے یہ افواہیں عام ہوئی تھیں کہ حکومت نے سرکاری اساتذہ پر پرائیویٹ کوچنگ سینٹروں میں کام کرنے پر پابندی عائدکی ہے اوراس عمل میں ملوث اساتذہ کے خلاف سختی سے نمٹا جائے گا جبکہ حقیقت یہ ہے کہ حکومت نے ایسا کوئی حکم نامہ جاری نہیں کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے سرکاری اساتذہ سے صرف یہ کہا ہے کہ وہ دفتری اوقات کے دوران پرائیویٹ کوچنگ سینٹروں میں نہ پڑھائیں اور موسم سرما کی چھٹیوں کے دوران وہ کسی بھی پرائیویٹ کوچنگ سینٹر میں پڑھا سکتے ہیں ۔