پرائمری اسکول ناڑوگن مہورعمارت کا منتظر

مہور//زون مہور کا پرائمری اسکول ناڑوگن گلاب گڑھ ،جو کہ 2004 میں ای جی ایس سینٹر بنا تھا لیکن 15 سال گزر جانے کے بعد بھی یہ اسکول عمارت کا منتظر ہے۔اس اسکول میں 30 سے زائد بچے زیر تعلیم ہیں جنہیں پڑھانے کیلئے دو استادمحمد امین اور عبدالرشید ہیں۔اگرچہ کبھی تیز دھوپ یا بارش ہو تو استاتذہ کومجبور ہوکر بچوں کو چھٹی کرنی پڑتی ہے۔جس کی وجہ سے بچوں کی پڑھائی پر برا اثر پڑتا ہے۔مقامی لوگوں نے کشمیرعظمیٰ کو بتایا کہ گزشتہ سال اس اسکول کے استاتذہ نے اپنے پیسوں سے اس اسکول کیلئے ایک شیڈ بنایا تھا لیکن بد قسمتی سے اس سال شدیدبرفباری کی وجہ سے وہ شیڈ بھی ٹوٹ گیا اب طلباء کو کھلے آسمان تلے درس لینا پڑ رہا ہے۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ ان کے ساتھ ناانصافی کی جارہی ہے اگرچہ بچوں کو محکمہ تعلیم کی طرف سے اچھی سہولیات دی جاتی تو ان کے بچے بھی اچھی نوکریاں حاصل کرتے لیکن بدقسمتی تو یہ ہے ان کے بچوں کیلئے محکمہ سے گزشتہ 15 سال سے عمارت نہیں بن سکی۔مقامی لوگوں نے محکمہ تعلیم کے اعلیٰ حکام سے مانگ کی ہے کہ اس علاقہ کی طرف توجہ دی جائے اور جلد سے جلد سکول کی عمارت کا کام شروع کیا جائے۔