پتھرائو دن میں ہوا،قہر رات کو بپا کیا گیا

کولگام //کھڈونی کیموہ کولگام میں فورسز کی زیادتیوں کیخلاف علاقے میں ہرتال رہی اور اس دوران قصبے کی تمام دوکانیں ، تجارتی مرکز اور تعلیمی ادارے بند رہے۔ مقامی لوگوں کا کہنا  ہے کہ منگل کی شام فورسز کی چند گاڑیاں علاقے سے گذری تھی، جس کے دوران ریڈونی پائین (گھاٹ) کے مقام پر اُن پر پتھرائو ہوا۔لوگوں نے کہا کہ اُس وقت فورسز گاڑیاں وہاں سے چلی گئیں اور جوابی کارروائی نہیں کی لیکن رات کے گیارہ بجے فورسز کی بھاری نفر ی ریڈونی پائین میں داخل ہوئی اور اُنہوں نے قہر برپا کر دیا ۔ نہ صرف بستی میں سینکڑوں گاڑیوں کے شیشے توڑ ڈالے گئے بلکہ دو درجن مکانوں کی کھڑکیاں اور  دروازے توڑے گئے۔ اس موقعہ پر انکی راہ میں جو بھی آیا اُسکی ہڈی پسلی ایک کردی گئی جس سے تین افراد زخمی ہوئے۔ زخمیوں میں سنا اللہ حجام ولد غلام حسن اور نذیر احمد وانی ولد غلام محمد شامل ہیں،جنہیں علاج ومعالجہ کیلئے ضلع ہسپتال اننت ناگ لے جایا گیا جہاں سے پیشے سے ڈرائیور سنا اللہ حجام کو سرینگر منتقل کیا گیا ۔ واقع کے خلاف بستی ہذا کے مرد و زن اور بچے کیموہ میں جمع ہوئے جہاں انہوں نے اس کارروائی کے خلاف مظاہرے کئے ۔