پاکستان میں شدید بارش سے 125لوگوں کی موت

اسلام آباد // پاکستان میں 15 جون سے موسلا دھار بارش کی وجہ سے ہونے والے حادثوں میں کم از کم 125افراد ہلاک اور 52زخمی ہوگئے ہیں۔ پاکستان کینیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (این ڈی ایم اے ) نے اس کی اطلاع دی۔پاکستان کا جنوبی صوبہ سندھ بارشوں سے سب سے زیادہ متاثر ہے جہاں 34 افراد ہلاک اور نو زخمی ہوگئے ہیں۔ انتظامیہ کا کہنا ہے کہ موسلا دھار بارش کی وجہ سے 24 مکانات کو نقصان پہنچا ہے ۔ادھر ، صوبہ سندھ کے وزیر اعلی سید مراد علی شاہ نے جمعہ کے روز بتایا کہ صوبے میں بارش کی وجہ سے 80 افراد کی موت ہوئی ہے ، جس میں سے 47 افراد کی موت صوبے کے دارالحکومت کراچی میں ہوئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ اگست میں کراچی میں ریکارڈ 604 ملی میٹر بارش ہوئی ہے اور اس نے اس مہینے میں کئی برسوں کا بارش کا ریکارڈ توڑ دیا ہے ۔ این ڈی ایم اے نے بتایا کہ صوبہ خیبر پختونخوا میں 29 افراد کی موت ہوئی ہے اور اتنے ہی لوگ زخمی ہوئے ہیں جبکہ 196 مکانات کو نقصان پہنچا ہے ۔جنوب مغربی بلوچستان میں بھی بارش سے کافی نقصان پہنچا ہے ۔ یہاں سیکڑوں لوگوں کے گھر سیلاب میں بہ گئے جس سے یہ لوگ بے گھر ہوگئے ہیں۔
 
 
 

کراچی کی متعدد سڑکیں بہہ گئیں

کراچی //کراچی میں مون سون کی کئی روز سے جاری موسلا دھار بارشوں سے شہر کا انفرااسٹرکچر شدید متا ثر ہو ا ہے، خاص کر جمعرات کو سارا دن جاری رہنے والی بارش سے متعدد سڑکوں پر ایک سے تین فٹ تک گڑھے پڑ گئے ہیں بعض مقامات پر سڑکیں دھنس گئی ہیں، جس کی وجہ سے ٹریفک کی روانی بھی شدید متاثر ہو رہی ہے، بارش سے پیدا ہونے والے متعدد آبادیوں میں سیلابی ریلے اند رونی سڑکوں کو پورا بہا کر لے گئی ہیں، جب سے حالیہ بارشوں کا سلسلہ شروع ہو ا ہے، متعلقہ اداروں نے انکی عارضی مرمت کا بھی آغاز نہیں کیا ماضی میں ایسی صورتحال میں پتھر اور ریتی کا مکسچر ڈال کر انہیں بند کر دیا جاتا تھا تاکہ ٹریفک کی ر وانی برقرار رہیلیکن حالیہ سیزن میں اسکا اہتمام نہیں کیا گیا اور سڑکوں پر اس قدر گہرے گھڑے پڑ گئے ہیں کہ حادثات کا آغاز ہو گیا ہے۔