پاکستان اور چین کے درمیان گلگت کے راستے بس سروس شروع

لاہور// بھارت کے اعتراض کے باوجود پاکستان اور چین نے لاہورسے چین کے کاشگر شہرتک بس سروس شروع کی۔یہ بس پاکستان کے زیر انتظام کشمیر سے گذر کر کاشگر پہنچے گی ۔سوموار کو رات دیر گئے لاہور سے یہ آرام دہ بس گل برگ لاہور سے روانہ ہوئی اور اس طرح دو ممالک سڑک کے ذریعے ایک دوسرے سے جڑ گئے ہیں ۔پاکستان اکنامک فورم چیرمین اقبال شمی نے اس بس سروس کے شروع ہونے کو پاکستان اور چین کے مابین رشتوں کو مضبوط بنانے سے تعبیر کیا ہے ۔ یہ بس لاہور سے کاشگر تک36 گھنٹوں میں پہنچ جائے گی اور ہفتہ میں یہ 4دن چلے گی اور بس راستے میں 5جگہوں پر رکے گی اور اس میں سفر کرنے کیلئے ویزا اور شناختی کارڈ ضروری ہوگا۔بس کا کرایہ13ہزار روپے رکھا گیا ہے اور اس طرح چین دورے کیلئے23ہزار روپے کا خرچہ آئے گا۔مسافر بس میں اپنے ساتھ 20کلو گرام وزن تک سامان اٹھا سکتا ہے۔یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ بھارت نے اس بس شروع کو شروع کرنے پر سخت اعتراض کیا تھا جبکہ چین نے اس بس سروس کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ یہ بس سروس دو ممالک کے مابین تعاون کا ایک حصہ ہے اور اس کا علاقائی تنازعہ کے ساتھ کوئی تعلق نہیں ہے۔