پاکستانی کھلاڑیوں میں اعتماد بڑھ رہا ہے :سرفراز

ابو ظہبی// میچ کے بعد گفتگو کرتے ہوئے پاکستانی کپتان سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ بیٹنگ کی ناکامی کے بعد باؤلرز نے جس طرح اس لو اسکورنگ میچ میں کارکردگی پیش کی اس کی جتنی بھی تعریف کی جائے وہ کم ہے ۔ سرفراز کے بقول شاداب خان نے جس طرح اتنے بڑے میچ میں عمدہ بیٹنگ اور باؤلنگ کی یہ اس بات کی علامت ہے کہ پاکستانی کھلاڑیوں میں اعتماد بڑھ رہا ہے ۔فیلڈ پر کھلاڑیوں کو ڈانٹنے کے سوال پر سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ میچ کی صوتحال کی وجہ سے کبھی کبھار ایسا ہو جاتا ہے اور پاکستانی ٹیم کے کھلاڑی بھی اس بات کو سمجھتے ہیں میں ان سے بعد میں سوری بھی کر لیتا ہوں۔اوس کے باوجود سرفراز کا خیال ہے کہ امارات کے ڈے اینڈ نائٹ میچوں میں پہلے بیٹنگ ہی زیادہ سود مند ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ اوس عام طور پر دوسری اننگز میں تیس اوورز کے بعد گر نا شروع ہوتی ہے لیکن اس وقت تک وکٹ سست سے سست تر ہو جاتی ہے اور بیٹنگ آسان نہیں رہتی۔مین آف دی میچ قرار پانے والے شاداب خان نے بتایا، ''ہمیں کوچ نے پورے پچاس اوورکھیلنے کی ہدایت کی تھی جس پر میں نے بابر سے مل کر عمل کیا۔ میں اپنی ابتدائی کرکٹ میں مڈل آرڈر میں کھیلتا رہا ہوں اور اب پاکستان کے لیے بطور آل راؤنڈر کھیل رہا ہوں تو میری کوشش ہوتی ہے کہ ٹیم کو دونوں میں سے کسی بھی شعبے میں ضرورت ہو تو اس کے کام آؤں۔شاداب کے مطابق دونوں میچوں میں اوس میں باؤلنگ کرنا آسان نہ تھا اور چندی مال کی وکٹ کی انہیں زیادہ خوشی ہوئی جسے گگلی پر آؤٹ کرنے کا انہوں نے پہلے سے منصوبہ بنایا تھا۔ یو این آئی۔