پاکستانی وزیر خزانہ عہدے سے مستعفی

اسلام آباد//پاکستان میں جمعرات کو بڑے سیاسی واقعہ میں وزیرخزانہ اسد عمر نے وزارت بدلے جانے کی پیش کش پر کابینہ چھوڑنے کا اعلان کردیا۔مسٹر عمر نے ٹویٹ کر کے خود اس کی اطلاع دی۔گزشتہ کئی دنوں سے ایسی قیاس آرائیاں لگائی جارہی تھیں کہ عمران خان کابینہ میں ردوبدل کرنے والے ہیں۔مسٹر عمر نے ٹویٹ کرکے کہا،‘‘وزیراعظم نے کابینہ میں مجھے وزارت خزانہ کی جگہ وزارت توانائی کا کام کاج دینے کی خواہش ظاہر کی تھی۔کابینہ میں کسی بھی عہدے پر نہ رہنے کے لئے میں نے ان کی اجازت لے لی ہے ۔میں پوری ایمانداری سے عمران خان حکومت کو پاکستان کی بہتر امید مانتا ہوں اور انشاء اللہ نیا پاکستان بنے گا۔’’پاکستان پیپلس پارٹی (پی پی پی)کے صدر بلاول بھٹو زرداری نے مسٹر عمر کے کابینہ چھوڑنے کے اعلان پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا،‘‘ملک کو مبارکباد ،پی ٹی آئی کا پہلا وکٹ گرا۔’’کابینہ چھوڑنے کے اعلان کے بعد مسٹر اسد نے پریس کانفرنس میں کہا ‘‘وزیر اعظم نے مجھے توانائی کی وزارت کی پیش کش کی ہے ، تاہم کابینہ سے الگ ہونے کا مقصد یہ بالکل نہیں کہ میں عمران خان کے ساتھ نہیں، میں ان کے نیا پاکستان کے ورژن کو سپورٹ کرنے میں ہمیشہ ساتھ ہوں۔’’انہوں نے کہا،‘‘جیسا کہ میں نے ٹویٹ میں لکھا ہے کہ وزیراعظم کابینہ میں ردوبدل کررہے ہیں اور مجھے وزارت توانائی کی پیش کش کی گئی۔ان کے ساتھ ہوئی ملاقات میں میں نے انہیں کابینہ سے ہٹنے کے لئے منا لیا۔’’یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ اسد عمر کی جانب سے یہ فیصلہ ایک ایسے موقع پر کیا گیا ہے جب گزشتہ ہفتے ہی وہ انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ (آئی ایم ایف) سے بیل آؤٹ پیکج پر گفتگو کے لیے واشنگٹن گئے تھے اور ان کی وہاں عالمی بینک کے حکام سے بھی ملاقاتیں ہوئی تھیں۔تاہم اسی دورے کے دوران ان کو عہدے سے ہٹائے جانے اور کابینہ میں اہم تبدیلیوں کے حوالے سے قیاس آرائیاں شروع ہو گئی تھیں جسے حکومت نے مسترد کردیا تھا۔پاکستان مسلم لیگ نواز کی ترجمان مریم اورنگ زیب نے مسٹر عمر کے استعفی پر کہا کہ بنیادی مسئلہ وزیراعظم ہیں اسد نہیں۔محترمہ اورنگ زیب نے کہاکہ اگر مسٹر عمر کی پالیسیاں اتنی بہتر تھیں اور مسئلہ سابقہ نواز شریف حکومت کا تھا تو وزیرخزانہ کو استعفی دینے کے لئے کیوں کہاگیا۔انہوں نے کہا،‘‘عمران خان نے یہ اعتراف کیا ہے کہ ان کی پالیسیوں سے پاکستان میں معاشی بحران پیداہوگیا ہے ۔بنیادی مسئلہ اسد نہیں ،وزیراعظم ہیں۔’’یواین آئی