پانی،بجلی اور سڑک سہولیات نہ دارد

سرنکوٹ// سرنکوٹ کے لوہر لسانہ علاقے کے لوگوں نے پانی ،بجلی اور سڑک کی سہولیات نہ ہونے پر حکام کے خلاف احتجاج کرنے کا انتباہ دیاہے۔مقامی لوگوں کاکہناہے کہ پانی اور بجلی کی سپلائی کا کوئی شیڈیول ہی نہیں جبکہ سڑک کی حالت بھی خراب ہے۔اس سلسلے میں بات کرتے ہوئے سماجی کارکن محمود خواجہ نے بتایاکہ اس علاقے کو جان بوجھ کر نظرانداز کیاگیاہے اور نہ ہی عوام کو کوئی سہولت میسر ہے اور نہ ہی ترقیاتی کام ہورہے ہیں۔سانگلہ لوہر کے سابق سرپنچ رمضان خواجہ نمبردار حاجی لطیف  نے بتایاکہ انہیں سہولیات فراہم نہ کرکے انتظامیہ احتجاج کیلئے مجبور کررہی ہے۔ان کاکہناہے کہ پانی اور بجلی کا مسئلہ حل نہیں ہوا اور نہ ہی ان کی سڑکیں کسی کام کی ہیں۔ان کاکہناہے کہ بجلی سپلائی کا تو پورے سرنکوٹ میں کوئی شیڈیول ہی نہیں جبکہ پانی کی بہتر سپلائی بھی میسر نہیں۔انہوں نے کہاکہ کچھ لوگوں نے جنرل لائن سے غیر قانونی کنکشن لگارہے ہیں جس کی وجہ سے پانی جمع ہونے کے بجائے ضائع ہورہاہے۔انہوں نے سڑک کی خراب حالت پر بھی حکام کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ سیاسی لیڈران نے انہیں ہمیشہ ووٹ بنک کے طور پر استعمال کیاہے اور ان کے مسائل حل نہیں کئے گئے۔انہوں نے مانگ کی کہ پانی اور بجلی کی سپلائی میں معقولیت لائی جائے اور سڑک کی حالت کو بھی بہتر بنایاجائے۔مقامی لوگوں نے ڈپٹی کمشنر پونچھ سے اپیل کی کہ وہ اس سلسلے میں ذاتی مداخلت کرکے انہیں مسائل سے نجات دلائیں۔رابطہ کرنے پر اے ای ای پی ایچ ای سرنکوٹ نے کہاکہ وہ متعلقہ افسر سے رپورٹ طلب کریں گے کہ پانی کی کیا پوزیشن ہے جس کے بعد ضروری اقدامات کئے جائیں گے۔