پارلیمانی انتخابات میں کامیابی کے بعداسمبلی انتخابات کیلئے بھاجپا متحرک

سرینگر// ریاستی اسمبلی انتخابات پر نظریں مرکوزکرتے ہوئے سابق حکمران جماعت بی جے پی نے پارلیمانی انتخابات کے دوران حاصل شدہ17لاکھ ووٹروں کو پارٹی کی بنیادی رکنیت میں شامل کرنے کا فیصلہ لیا ہے،جبکہ 6جولائی سے ریاست گیر ممبرشپ مہم کے دوران ارکان کی تعداد میں20فیصد اضافہ کرنے کی کوشش کی جائے گی۔ حالیہ پارلیمانی انتخابات کے دوران ریاست میں ووٹوں کے اشتراک میں غیر معمولی اضافہ کو مد نظر رکھتے ہوئے بی جے پی نے6جولائی سے10اگست تک جاری رہنے والی ممبر شپ مہم کے دوران تمام17لاکھ رائے دہندگان،جنہوں نے پارٹی کے حق میں ووٹ دیا،کو بنیادی رکن بنانے کا فیصلہ لیا۔ ووٹ بنک کو برقرار رکھنے کا بنیادی مقصد،ممکنہ طور پر امسال کے آخر میں ہونے والے اسمبلی انتخابات کے دوران زیادہ سے زیادہ نشستیں اور ووٹ کی حصولیابی کا ہے۔جموں میں بھاجپا کی کام چلائو کمیٹی کی میٹنگ کے دوران ان17لاکھ ووٹروں کو پارٹی کی بنیادی رکنیت فرہم کرنے کا فیصلہ لیا گیا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ اس سلسلے میں پارٹی کے سنیئر لیڈر اور وزیر اعظم دفتر کے انچارج وزیر مملکت ڈاکٹر جتند سنگھ نے بھی ہدایات دی ہے۔ حالیہ پارلیمانی انتخابات کے دوران بی جے پی نے جموں کی تمام2نشستوں پر کامیابی حاصل کی،جبکہ لداخ کی ایک نشست بھی اپنے نام کی۔
پارٹی کے اندرونی ذرائع کے مطابق حالیہ پارلیمانی انتخابات کے دوران بی جے پی نے46فیصد ووٹنگ کی شرح حاصل کی،جس کے نتیجے میں پارٹی کو ریاست میں3پارلیمانی نشستیں حاصل ہوئی،جبکہ بھاجپا نے ترال سمیت کئی اسمبلی نشستوں پر برتری حاصل کی۔ بی جے پی کے جنرل سیکریٹری اشوک کول نے اس بات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ پارٹی نے ان تمام17لاکھ ووٹروں کو بھاجپا میں شامل کرنے کا فیصلہ لیا ہے،جنہوں نے حالیہ پارلیمانی انتخابات کے دوران انکی جماعت پر اعتماد کیا۔انہوں نے کہا’’ ہم اس گرئوہ کو یکجا رکھنا چاہتے ہیں،جبکہ اس کے علاوہ ہم نے پارٹی میں20فیصد ممبران کا اجافہ کرنے کا ہدف مقرر کیا ہے۔‘‘ انہوں نے مزید کہا’’ یہ ہماری آئینی ذمہ داری ہے اور آئندہ دنوں میں ہر کسی ممبر کو اپنا رول اور کام سونپا جائے گا۔‘‘  بی جے پی میں پارٹی امورات کی نگرانی کرنے والے اشوک کول کا کہنا تھا کہ بی جے پی6 جولائی سے10جولائی تک ممبرشپ مہم شروع کریں گی۔ انہوں نے کہا’’ ہم تمام علاقوں اور قصبوںمیں لوگوں کے پاس جائے گے، اور انہیں پارٹی کے ترقی، امن اور خوشحالی کے ایجنڈا سے متعارف کرائے گے۔‘‘
پارٹی کے اندرونی ذرائع نے بتایا کہ پارٹی میں مزید ممبران کو شامل کرنے کا مقصد،امسال کے آخر میں منعقد ہونے والے اسمبلی انتخابات کے دوران وادی میں اپنا کھاتہ کھولنے کے علاوہ ممبران کو اکھٹا کرنا ہے۔ ذرائع نے بتایا’’ لوگوں کو پارٹی میں شامل کرنے کا واحد مقصد پارٹی کو مظبوط اور مستحکم کرنا ہے،اور وادی کے اہم نشستوں پر پارٹی کی کامیابی بھی ہیں۔‘‘ پارٹی نے گزشتہ اسمبلی انتخابات کے دوران کوئی بھی اسمبلی نشست حاصل نہیں کی،تاہم کچھ لیڈران قانون ساز کونسل میں جگہ بنانے میں کامیاب ہوئے۔ بی جے پی کے ریاستی ترجمان الطاف ٹھاکر نے بتایا کہ پارٹی نے جموں خطے میں جگل کشور ڈوگرہ اور پریا سیٹھی کو،بنیادی ممبر شپ مہم کی ذمہ داری سونپی،جبکہ وادی میں اس کی کمان علی محمد کو سونپی گئی۔انہوں نے کہا’’ ممبر شپ مہم پارٹی آئین کا حصہ ہے،اور اس سے پارٹی زمینی سطح پر سر نو مضبوط ہوگی۔