ٹی 20 ورلڈ کپ ہندوستان کو ہرا کر انگلینڈ فائنل میں پہنچ گیا

ایڈیلیڈ//یو این آئی// ایلکس ہیلز (86 ناٹ آؤٹ) اور جوس بٹلر (80 ناٹ آؤٹ) کی نصف سنچریوں کی بدولت انگلینڈ نے جمعرات کو ٹی 20 ورلڈ کپ کے سیمی فائنل میں ہندوستان کو 10 وکٹوں سے شکست دے کر پاکستان کے ساتھ فائنل میں جگہ بنالی۔ہندوستان نے انگلینڈ کو جیت کے لیے 169 رنز کا ہدف دیا جسے بٹلر-ہیلز کی جوڑی نے چار اوورز باقی رہتے حاصل کر لیا۔ایلکس ہیلز نے 47 گیندوں پر چار چوکوں اور سات چھکوں کی مدد سے ناٹ آؤٹ 86 رنز بنائے جبکہ کپتان بٹلر نے 49 گیندوں پر نو چوکوں اور تین چھکوں کی مدد سے ناٹ آؤٹ 80 رنز بنائے ۔میلبورن میں اتوار کو ہونے والے فائنل میں انگلینڈ اور پاکستان دونوں ٹیمیں دوسری بار ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کا ٹائٹل جیتنے کا دعویٰ پیش کریں گی۔ انگلینڈ نے اس سے قبل 2010 میں ٹائٹل جیتا تھا جب کہ اسے ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ 2016 کے فائنل میں ویسٹ انڈیز کے ہاتھوں شکست ہوئی تھی۔دوسری جانب پاکستان نے 2009 میں ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کی ٹرافی اپنے نام کی تھی اور یہ ان کا دوسرا فائنل ہے ۔

 

پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان 1992 کے ورلڈ کپ کا فائنل بھی انگلینڈ میں کھیلا گیا تھا جہاں عمران خان کی ٹیم نے انگلینڈ کو شکست دے کر ٹرافی اپنے نام کی تھی۔بٹلر اور ہیلز کی جوڑی نے 169 رنز کے تعاقب میں دھماکہ خیز آغاز کیا۔ دونوں نے پاور پلے میں انگلینڈ کے لیے 63 رنز جوڑے جبکہ ہندوستان ایک وکٹ کے نقصان پر 38 رنز ہی بنا سکاتھا۔بٹلر ہیلز نے دھماکہ خیز آغاز کو بڑے اسکور میں تبدیل کرتے ہوئے 11 ویں اوور میں 100 رنز کا ہندسہ چھو لیا جبکہ بٹلر نے 16 ویں اوور کی آخری گیند پر چھکا لگا کر انگلینڈ کو فائنل میں پہنچا دیا۔یہ ٹی۔ٹوئنٹی ورلڈ کپ میں انگلینڈ کی سب سے زیادہ اور ٹی۔ٹوئنٹی انٹرنیشنل میں دوسری سب سے بڑی شراکت ہے ۔ اس کے علاوہ یہ ہندوستان کے خلاف پہلی وکٹ کے لیے سب سے زیادہ شراکت ہے ۔ اس سے قبل بابر اعظم اور محمد رضوان نے ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ 2021 میں پاکستان کو ہندوستان کے خلاف 152 رنز کی ناٹ آؤٹ شراکت داری سے فتح دلائی تھی۔اکسر پٹیل (4 اوور، 30 رنز) اور ارشدیپ سنگھ (2 اوور، 15 رنز) کو چھوڑ کر کوئی بھی ہندوستانی گیند باز رنز پر قابو نہ رکھ سکا۔ روی چندرن اشون نے دو اووروں میں 27 رنز دیے جبکہ محمد شامی نے تین اووروں میں 39 رنز دیے ۔ بھونیشور کمار نے دو اووروں میں 25 اور ہاردک پانڈیا نے تین اوورز میں 34 رنز دیے ۔اس سے قبل ہندوستان نے ہاردک پانڈیا کی 61 رنز کی دھماکہ خیز اننگز پر 168 رنز بنائے ۔ انگلینڈ نے ٹاس جیت کر ہندوستان کو بیٹنگ کے لیے بلایا اور دوسرے ہی اوور میں کے ایل راہل کو آؤٹ کیا۔ روہت شرما نے کوہلی کے ساتھ دوسری وکٹ کے لیے 47 رنز جوڑے لیکن وہ 28 گیندوں میں 27 رنز ہی بنا سکے ۔عادل رشید نے ہندوستان کی مشکلات میں اضافہ کرتے ہوئے رن ریٹ پر لگام ڈالی اور سوریہ کمار یادو (14) کی قیمتی وکٹ حاصل کی۔ہندوستان نے 14 اوورز میں صرف 90 رن پر تین وکٹیں گنوا دیں اور ایک چیلنجنگ اسکور تک پہنچنے کے لیے دھماکہ خیز شراکت کی ضرورت تھی۔ کوہلی اور پانڈیا نے 40 گیندوں میں 61 رنز جوڑے ، جس سے ہندوستان کو یہ شراکت ملی۔ تاہم کوہلی 18ویں اوور میں 40 گیندوں پر ایک چھکے اور چار چوکوں کی مدد سے 50 رنز بنانے کے بعد آؤٹ ہوگئے ۔ کوہلی پہلی بار ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے سیمی فائنل میں آؤٹ ہوئے اور ان کی وکٹ کرس جارڈن نے حاصل کی۔کوہلی کی وکٹ گرنے کے بعد بھی پانڈیا باز نہیں آئے ۔ انہوں نے 19ویں اوور کی آخری گیند پر ایک چوکے کی مدد سے 29 گیندوں میں اپنی ففٹی مکمل کی، جبکہ کرس جارڈن کے آخری اوور میں ایک چوکا اور ایک چھکا لگا کر ہندوستان کو 20 اوور میں 168/6 تک پہنچا دیا۔پانڈیا نے اپنی شاندار اننگز میں 33 گیندیں کھیلی اور چار چوکوں اور پانچ چھکوں کی مدد سے 63 رنز بنائے ۔ انگلینڈ کی جانب سے جارڈن نے چار اوورز میں 43 رنز دے کر تین وکٹیں حاصل کیں جبکہ کرس ووکس اور عادل رشید نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔