ٹیگور ہال میں پانچ روزہ تھیٹر ورکشاپ اختتام پذیر

سرینگر// ایکٹرس کریٹیو تھیٹر کی جانب سے 5 روزہ تھیٹر ورکشاپ جمعہ کو سرینگر میں اختتام پذیر ہوا۔اس ورکشاپ کیلئے اے سی ٹی کو ونگس کلچرل سوسائٹی (نئی دہلی) کا تعاون حاصل تھا۔ٹیگور ہال سرینگر میں اختتامی تقریب منعقد ہوئی۔دہلی سے اداکار اور ڈائریکٹر طارق حمید ورکشاپ کے ڈائریکٹر تھے۔انہوںنے 2004 میں اپنی تھیٹر کوششوں کا آغاز کیا۔ وہ ایک تھیٹر ڈائریکٹر، اداکار اور شری رام سنٹر، نئی دہلی میں ایک فیکلٹی ممبرہیں۔ انہوں نے ونگس کلچرل سوسائٹی کے بینر تلے ٹوپی کی داستان، دی ویو، مہابھوج اور بہت سے دوسرے ڈراموں کی ہدایت کاری کی ہے جو ہندوستان کے نمایاں تہواروں میں دکھائے گئے ہیں۔ انہوں نے مختلف مختصر فلموں، ٹی وی شوز اور فلموں میں بھی کام کیا ہے۔ وہ انجان ٹی وی پر ٹی وی شو 'انڈیا بولے گا' میں اپنی اداکاری کے لیے مشہور ہیں۔انہوں نے 2009 میں ونگس کلچرل سوسائٹی بنائی جو سماجی طور پر متعلقہ تھیٹر کے لیے وقف تھی۔ اس گروپ نے 8ویں تھیٹر اولمپک، لکھنو¿ لٹریچر فیسٹیول، 15ویں اور 17ویں بھارت رنگ مہااتسو میں حصہ لیا۔طارق نے کہا”یہ میرا کشمیر کا پہلا دورہ ہے۔ میں یہاں آکر اور ایک تھیٹر ورکشاپ کی ہدایت کاری کے لیے شکرگزار ہوں، جو میرے لیے کشمیر کا دورہ کرنے کا بہترین طریقہ ہے“۔انہوں نے مزید کہا”دنیا کے اس حصے کے لوگوں سے ملنے اور ریہرسل کی جگہ کا اشتراک کرنے کا موقع ایک بہترین تجربہ اور سیکھنے کا راستہ فراہم کرتا ہے“۔ان کا مزید کہنا تھا ”میرے لیے ان خواہشمند اداکاروں کے لیے ورکشاپ کا انعقاد اہمیت کا حامل ہے ۔ACT کے چیئرمین اور ڈائریکٹر مشتاق علی احمد خان نے کہا ”مجھے اپنے علاقے میں ایسی سرگرمیوں کا انعقاد کرنے پر بہت خوشی ہے۔ یہ تھیٹر کے خواہشمند فنکاروں اور اس فن کے بارے میں مزید جاننے کا موقع فراہم کرتا ہے۔ میں مستقبل میں بھی ایسے اقدامات کرتا رہوں گا“۔ انہوں نے مزید کہا کہ وہ کشمیر میں آرٹ اور کلچر کی تمام شکلوں کو فروغ دینے کے لیے انتھک محنت کریں گے۔ خان نے کہا”اس سے مجھے اطمینان اور فنکارانہ خوشی ملتی ہے“۔طارق جاوید ورکشاپ میںمہمان خصوصی تھے اور انہوں نے مہمانانِ گرامی وحید جیلانی، مشتاق بالا، شیخ حنیف، گل جاوید اور گلزار بٹ کے ساتھ شریک طلباءمیں اسناد تقسیم کیں۔طارق جاوید اور دیگر مہمانوں نے مشتاق علی احمد خان، ان کے ادارے کے اس اقدام کو سراہا اور ڈائریکٹر طارق حمید کا بھی شکریہ ادا کیا۔