ٹھاٹھری کلہوتران شاہراہ کی حالت کب سدھرے گی؟

ڈوڈہ //ڈوڈہ ضلع میں جہاں ایک دہائی قبل شروع کئے گئے درجنوں سڑک پروجیکٹوں پر کام سست روی کا شکار ہوا ہے وہیں پی ایم جی ایس وائی و تعمیرات عامہ کی زیر نگرانی اندرونی دیہات کی رابطہ سڑکیں دن بدن خستہ حال ہورہی ہیں۔ادھر 12 کلومیٹر ملک پورہ تا گندوہ و گواڑی سڑک پر پانچ برسوں میں دو بار تارکول بچھانے کے ٹینڈر ہوئے لیکن ابھی تک صرف 6 کلومیٹر پر ہی تارکول ڈالا گیا ہے۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ گندوہ تا گواڑی سڑک کی حالت لنک روڈ سے بھی بد تر ہوئی ہے۔جگہ جگہ گہرے کھڈے پڑ گئے ہیں.۔حفاظتی بند خستہ حال ہو چکے ہیں اور نکاسی نظام نہ ہونے کی وجہ سے بارشوں کے دوران سڑک پر سیلابی صورتحال پیدا ہو جاتی ہے۔ایک مقامی شہری تنویر احمد نے کہا کہ تعمیراتی ا یجنسی کی سست روی و متعلقہ محکمہ کی عدم توجہی کی وجہ سے ہزاروں نفوس پر مشتمل آبادی کو اس سڑک پر سفر کرنے میں کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔انہوں نے کہا کہ اس سڑک کو مرکزی حکومت نے قومی شاہراہ کا درجہ دیا ہے لیکن اس کی حالت تشویشناک ہے۔علاقہ کے سیاسی و سماجی کارکن ریاض احمد زرگر نے کہا کہ اس سڑک کی تعمیر پر پچھلے تین دہائیوں سے کروڑوں روپے کی رقم کاغذوں میں صرف کیے گئی لیکن زمینی حقائق اس سے بہت مختلف بیان کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ محکمہ کی نااہلی کی وجہ سے مریضوں، حاملہ خواتین، ضعیف العمر لوگوں، بچوں و عام مسافروں کے لئے یہ سڑک وبال جان بن گئی ہے۔انہوں نے کہا کہ گذشتہ ماہ ڈپٹی کمشنر کے گندوہ دورے کے دوران مقامی لوگوں نے یہ معاملہ ان کی نوٹس میں لایا تھا جس کے بعد کچھ دنوں تک ملک پورہ سے گندوہ کی طرف میٹل بچھانے کا عمل شروع کیا گیا لیکن بعد میں پھری ادھورا چھوڑا گیا۔وہیں 6 کلومیٹر گندوہ سے ملکپورہ شاہراہ پر تار کول بچھانے کے لئے 2016 سے 2020 تک دو بار ٹینڈر نکالے گئے لیکن پانچ سال کا عرصہ گذر جانے کے بعد بھی چار کلومیٹر سڑک پر تار کول نہیں بچھایا گیا ہے۔بی جے پی ضلع سیکرٹری مہندر سنگھ سرمال نے کہا کہ اس بارے میں متعدد بار متعلقہ محکمہ سے رجوع کیا لیکن کوئی عملی قدم نہیں اٹھایا گیا۔ انہوں نے کہا کہ جو ٹھیکیدار وقت پر کام مکمل کرنے میں ناکام ہوتا ہے اس کاٹینڈر منسوخ کر کے بلیک لسٹ میں ڈالا جانا چاہیے۔ڈی ڈی سی ممبر کاہرہ معراج الدین ملک نے تعمیرات عامہ کی ناقص کارکردگی پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ متعلقہ محکمہ کی عدم توجہی سے تعمیراتی کاموں میں غیر معیاری مواد کا استعمال کیا جاتا ہے اور کئی منصوبے اپنی معیاد پوری ہونے کے بعد بھی ادھورے پڑے ہوئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ٹھاٹھری کلہوتران شاہراہ چار تحصیلوں کو بیرونی دنیا سے جوڑنے کا واحد ذریعہ ہے اور ملک پورہ تا گندوہ گواڑی سب ڈویژنل ہیڈکواٹر سے ملتی ہے لیکن اس کی حالت انتہائی ناگفتہ بہہ بن گئی ہے۔ملک نے ایسے ٹھیکیداروں کو بلیک لسٹ میں ڈالنے کا مطالبہ کرتے ہوئے ایک جی انتظامیہ سے مانگ کی جو ایجنسی وقت پر کام مکمل کرنے میں ناکام ہوگی اس کا ٹینڈر منسوخ کر کے کارڈ کو بلیک لسٹ میں ڈالا جائے تاکہ تعمیری کاموں کو بروقت پائے تکمیل پہنچایا جاسکے۔واضح رہے کہ یہ سڑک جہاں 65 پنچائتوں کی عوام کو صدر مقام گندوہ و بیرونی دنیا سے جوڑتی ہے وہیں سابق وزیر اعلیٰ غلام نبی آزاد، سابق وزیر مرحوم محمد شریف نیاز و سابق ایم ایل اے دلیپ سنگھ پریہار و سابق ایم سی محمد اقبال بٹ کے آبائی گاؤں کو بھی یہی سڑک جاتی ہے لیکن اس کے باوجود اس کی حالت بہتر نہیں ہے۔