ٹھاٹھری بٹوت شاہراہ پر ریت, پتھراور باجری کے ڈھیر | راستہ تنگ پڑنے سے سڑک حادثات میں اضافہ کا خطرہ

ڈوڈہ /اشتیاق ملک/کشتواڑ بٹوت شاہراہ پر جہاں منفی درجہ حرارت کی وجہ سے متعدد مقامات پر کورا لگنے کا عمل شروع ہو گیا ہے، وہیں بیشتر جگہوں پر جمع غیر قانونی ریت، بجری، پتھر و ملبہ سے شاہراہ پر سفر کرنے میں دشواری کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ انتظامیہ کی عدم توجہی پر سیول سوسائٹی ممبران نے ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ضلع مجسٹریٹ نے کئی ماہ قبل شاہراہ پر غیر قانونی طور پر ریت، بجری و دیگر میٹریل جمع رکھنے پر پابندی عائد کی تھی لیکن اس حکمنامہ پر کچھ ہی دن تک اثر دیکھنے کو ملا اور اس کے بعد پھر سے یہ سلسلہ شروع کیا گیا۔کشمیر عظمیٰ سے بات کرتے ہوئے کئی عوامی وفود نے کہا کہ کشتواڑ، ٹھاٹھری ،ڈوڈہ و بٹوت شاہراہ پر کورا لگنے و غیر قانونی طور پر جمع میٹریل سے چھوٹی گاڑیوں کے ساتھ ساتھ بڑی مال بردار گاڑیوں کے چلنے میں دشواری پیدا ہوتی ہے۔ خطہ کے نامور سیاسی و سماجی کارکن ریاض احمد زرگر نے کہا کہ شاہراہ کے دونوں اطراف پر جمع میٹریل سے راستہ تنگ ہو تا ہے اور اس سے سڑک پر حادثات کا خطرہ بڑھ سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پچھلے ایک ہفتہ سے ٹھاٹھری سے بٹوت تک کئی گاڑیاں آپس میں ٹکرا گئی ہیں۔ ایک اور سماجی کارکن مہندر سنگھ سرمال نے ضلع و مقامی انتظامیہ سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ٹھاٹھری سے بٹوت شاہراہ پر جمع میٹریل کو ہٹانے کا عمل شروع کیا جائے تاکہ مسافروں کو سفر کرنے میں آسانی ہو ۔ انہوں نے لوگوں و ڈرائیواروں سے بھی اپیل کی کہ وہ موسم کی تبدیلی کو مدنظر رکھتے ہوئے احتیاط سے سفر کریں۔