ٹریڈرس فیڈریشن سوپور انتظامیہ سے نالاں

 سوپور//ٹریدرس فیڈریشن سوپور کے صدر قاضی حشمت اللہ نے کہا حکام پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہیں صرف یقین دہانیوں سے بہلایا جاتا ہے اور زمینی سطح پر کوئی اقدام نہیں کیا جارہا ہے۔قاضی حشمت اللہ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔انہوں نے کہا کہ ٹریڈرس فیڈریشن نے حالیہ ایام میں اے ڈی سی سوپور اور ایس ایس پی سوپور کے ساتھ قصبے کے مختلف معاملات پر گفت وشنید کی بلکہ ایس ای الیکٹرک ڈویژن،ایگزیکٹیو آفیسر میونسپل کونسل ، بی ایم او سوپور، ایگزیکٹیو انجینئر الیکٹرکل ڈویژن اور اے آر ٹی او سوپور کیساتھ بھی طویل میٹنگیں کیں۔فیڈریشن صدر کے مطابق انہیں یقین دہانیوں کے سوا کچھ حاصل نہیں ہوا۔انہوں نے کہا کہ قصبے میں آئے روز نقب زنی کی وارداتیںزیادہ ہی پریشان کن ہیں۔انہوں نے کہا کہ پچھلے مہینوں میں تقریباً بیس سے پچیس شبانہ نقب زنی کی وارداتیں رونما ہوئیں لیکن کوئی سراغ نہیں مل سکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اکثر دکاندارا ب ایف آئی آردرج کرنے اور انشورنس کمپنیوں سے دور ہی رہنا پسند کرتے ہیںکیونکہ ان کارروائیوں میںوقت ضائع کرنے کے بغیر کچھ حاصل نہیں ہوتا۔قاضی حشمت اللہ نے کہا کہ ان تمام مسائل کے پیش نظر اب ٹریڈرس فیڈریشن سوپور اس نتیجے پر پہنچی ہے کہ قصبہ سوپور کی دیگر تنظیموں کے زعماء کے ساتھ رابطہ کرکے ایک مشترکہ لائحہ عمل مرتب کیا جائے اور متعلقہ حکام کو ان کی غفلت شعاری کا احساس دلایا جائے۔انہوں نے گورنر کے صلاحکارخورشید احمدگنائی اورصوبائی کمشنر بصیر احمد خان سے گذارش کی کہ قصبہ سوپور کی شان رفتہ کو بحال کرنے کیلئے اپنی سطح پر ضروری اقدامات کئے جائیںاور قصبہ کے عوام کو شکریہ ادا کرنے کا موقعہ فراہم کریں۔