ٹرانسپورٹ محکمہ کے مطالبات زر منظور

 جموں//ٹرانسپورٹ کے وزیر سنیل کمار شرما نے کہا کہ ریاست میں ٹریفک کی نقل و حمل میںمعقولیت لانے کے لئے مؤثر او رسائنس طریقے کے اقدامات کئے جارہے ہیں اور اس ضمن میں ریاست میں روڑ ایکسیڈنٹ ڈیٹا منیجمنٹ نظام متعارف کرنے کی ضمن میں کام کر رہی ہے تاکہ سڑکوں پر سیفٹی کو یقینی بنایا جاسکے۔ٹرانسپورٹ کے وزیر مملکت سنیل کمار شرما نے قانون ساز اسمبلی میں متعلقہ محکمہ کے مطالباتِ زر پر ہوئی بحث کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ رائیڈسیف نامی ایک ایپ بی شہریوں کے لئے تیار کی جارہی ہے تاکہ غیر ذمہ دارانہ ڈرائیونگ کا پتہ لگایا جاسکے ۔انہوں نے کہا کہ جموں اور سرینگر میں آئی ڈی ٹی آر قائم کرنے کے لئے بھی کام شروع کیا گیاہے ۔آمدن کے حوالے سے وزیر نے کہاکہ ایم وی ڈی محکمہ نے پچھلے سال دسمبر 2017 تک 163.68کروڑ روپے کی آمدن حاصل کی ہے ۔انہوں نے کہا کہ ریاست میں ایچ ایس آر پی عملائی جارہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ سٹیٹ روڑ سیفٹی پالیسی بھی زیر عمل ہے تاکہ حادثات اور اس دوران اموات کو 2020تک 50فیصد تک کم کیا جاسکے۔وزیرنے ٹرانسپورٹروں کو دئیے جارہے ریلیف اقدامات کے حوالے سے کہا کہ ایم او آر ٹی ایچ مرکزی سرکار کی طرف سے لاگو کئے جارہے فیس میں 50فیصد ریلیف دینا اور کئی دیگر فلاحی اقدامات بھی ٹرانسپورٹروں کے لئے کئے جارہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ریاست میں روڑ سیفٹی فنڈ قائم کرنے اور سڑکوں پر سے کالے دھبوں کودور کرنے کے لئے روڑ سیفٹی کونسل بل متعارف کی جارہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ قومی شاہراہوں پر ایمرجنسی صورتحالوں سے نمٹنے کے لئے 136 بنیادی لائف سپوٹ ایمبولنسیں مرکزی سرکار کی طرف سے منظور کی گئی ہے اور اس مقصد کے لئے رقومات پہلے ہی صحت محکمہ کو واگذار کی گئی ہیں۔سٹیٹ موٹر گراجز کی گاڑیوں کی تفصیلات دیتے ہوئے وزیر نے کہا کہ ریاست بھر میں مختلف محکموں اور سیکرٹریٹ کو 579گاڑیاں الاٹ کی گئی ہیں۔محکمانہ بنیادی ڈھانچے کی ترقی کے حوالے سے نئے اقدامات کے بارے میں وزیر نے کہاکہ 102نئی گاڑیاںخریدی جارہی ہیں ۔ اس کے علاوہ ایس ایم جی کے فلیٹ میں 156گاڑیوں کا اضافہ کیا جارہا ہے۔سنیل شرما نے جے کے ایس آر ٹی سی کے کام کاج کے بارے میں کہا کہ یہ کارپوریشن ٹرانسپورٹ نظام کو فائدہ بخش اور عوام دوست بنانے کے لئے جامع اقدامات کر رہی ہے۔انہوں نے جانکاری دی کہ ایس آر ٹی سی کے پاس کل 847گاڑیاں ہیں جن میں 518بسیں ، 313ٹریکیں ،11نان کمرشل بسیں اور پانچ ٹریک شامل ہیں۔انہوںنے کہا کہ کارپوریشن ریاست میں آئی ٹی ایم ایس متعارف کر رہا ہے جسے جون2018تک مکمل کیا جائے گا۔ سمارٹ سٹیز سکیم کے حوالے سے وزیرنے کہا کہ اس سکیم کے تحت 140 الیکٹرک بسیں خریدی جارہی ہیں ۔ علاوہ ازیں دونوں دارالخلافائی شہروں میں 8چارجنگ سٹیشن قائم کرنے کا منصوبہ ہے ۔انہوں نے کہا کہ فیم انڈیا سکیم کے تحت 15بسیں جے کے آئی ڈی پی کے تحت 15بسیں منظور کی گئی ہیں ۔ اس کے علاوہ 40الیکٹرک بسیں اور 20 الیکٹر ک رکشا خریدنے کا بھی منصوبہ ہے ۔انہوں نے کہا کہ امرت کے تحت رواں مالی سال کے دوران 38بسیں خریدی جارہی ہیں ۔