ٹراما ہسپتال کنگن میں طبی اور نیم طبی عملے کی کمی

گاندربل//ٹراما ہسپتال کنگن میں ڈاکٹروں اور نیم طبی عملہ کی کمی کی وجہ سے بیماروں اور تیمارداروں کوسخت مشکلات درپیش ہیں۔اس ہسپتال میں روزانہ 900 سے زائد مریضوں کا علاجہ و معالجہ کیا جاتا ہے جبکہ امرناتھ یاترا کے دوران ہسپتال میں بھاری رش رہتا ہے لیکن گزشتہ دو سال سے ہسپتال میں تعینات ڈاکٹروں کویہاں سے تبدیل کرکے دیگرہسپتالوں میں تعینات کیا گیا۔ سنیچر کو ہسپتال میں تعینات بچوں کے ایک ڈاکٹر سمیت دو ڈاکٹروں کی تبدیلی لائی گئی جس سے ٹراما ہسپتال آنے والے مریضوں کے مشکلات میں مزید اضافہ ہوگیا۔ سیول سوسائٹی کنگن کے جنرل سیکریٹری محمد اشرف نے اس سلسلے میںکشمیر عظمی کو بتایاکہ حال ہی میں نئے ضلع ترقیاتی کمشنر گاندربل نے کنگن میں کئی وفود سے ملاقات کی جہاں سیول سوسائٹی اراکین نے انہیں اس تناظر میں ایک میمورنڈم بھی پیش کیا تھالیکن اس پر طرہ یہ کہ سنیچر کو مزید دو ڈاکٹروں کی تبدیلی عمل میں لائی گئی ۔انہوں نے کہا کہ اگر ضلع انتظامیہ اور محکمہ صحت نے ٹراما ہسپتال میں ڈاکٹروں کی عدم دستیابی کو دور نہیں کیا تو سیول سوسائٹی کنگن سڑکوں پر آئے گی۔