ویسٹ انڈین ٹیم ہر سال پاکستان کا دورہ کریگی

 لاہور //پاکستان کرکٹ بورڈ کو یقین ہے کہ ویسٹ انڈیز کی کرکٹ ٹیم سن 2018سے ہر سال پاکستان آ کر تین ٹوئنٹی 20میچوں کی سیریز کھیلے گی۔ گزشتہ ماہ سری لنکا کی ٹیم بھی لاہور میں ٹوئنٹی 20میچ کھیلنے آئی تھی۔ گزشتہ ماہ آٹھ برس قبل دہشت گردانہ حملے کا نشانہ بنائی جانے والی سری لنکا ہی کی ٹیم نے پاکستان کے خلاف بین الاقوامی ٹوئنٹی 20سیریز کا آخری میچ لاہور کے قذافی اسٹیڈیم میں آ کر کھیلا، جس کے بعد پاکستان میں بین الاقوامی کرکٹ مقابلوں کی واپسی کی امید پیدا ہوئی۔پی سی بی کے مطابق ویسٹ انڈیز کی ٹیم اگلے برس تین ایک ٹی ٹوئنٹی میچوں کی سیریز کھیلنے کے لیے پاکستان آئے گی جس کے بعد اگلے پانچ برسوں تک یہ ٹیم ہر سال ایسی ہی ایک سیریز کھیلنے کے لیے بھی آتی رہے گی۔ اس بارے میں تفصیلات بتاتے ہوئے پی سی بی کے چیئرمین نجم سیٹھی کا کہنا تھاکہ ہم نے ویسٹ انڈیز کے ساتھ اگلے پانچ برسوں کے لیے معاہدہ کر لیا ہے ۔ یہ معاہدہ دونوں کرکٹ بورڈز کے مابین آپسی سطح پر کئے گئے مذاکرات کا نتیجہ ہے اور یہ دورے دسمبر اور جنوری میں انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کی جانب سے ترتیب دیے جانے والے 'فیوچر ٹور پروگرام' سے تعلق نہیں ہو گا۔ پی سی بی کے مطابق پاکستان اور ویسٹ انڈیز کی قومی کرکٹ ٹیموں کے مابین دوطرفہ سیریز کے اس سلسلے میں پہلی سیریز کے میچ اگلے برس انتیس مارچ سے لے کر یکم اپریل تک کھیلے جائیں گے ۔ تاہم ابھی تک یہ فیصلہ نہیں کیا گیا کہ اس سیریز کے میچ کن شہروں میں کھیلے جائیں گے ۔معاہدے کے مطابق ویسٹ انڈیز ٹیم کی پاکستان آمد کے جواب میں پاکستانی ٹیم بھی ویسٹ انڈیز کرکٹ بورڈ کی میزبانی میں سیریز کھیلے گی۔ ویسٹ انڈیز کی میزبانی میں کھیلے جانے والی سیریز کے میچ ممکنہ طور پر امریکا میں کھیلے جائیں گے ۔ اس مجوزہ سیریز میں دونوں ٹیموں کے علاوہ کسی تیسری ٹیم کو بھی شامل کیا جائے گا۔