ووٹروں کو جھوٹ اور سچ میں فیصلہ کرناہے :راہل گاندھی

بدایوں//کانگریس صدر راہل گاندھی نے وزیر اعظم نریند ر مودی پر حملہ کرتے ہوئے کہا کہ مودی نے نوٹ بندی کر کے اور جی ایس ٹی نافذ کر کے اپنے پسندیدہ سرمایہ کاروں کی جیب بھرنے کا کام کیا ہے ۔مسٹر گاندھی آنولہ پارلیمانی سیٹ سے کانگریس امیدوار سروراج سنگھ کی حمایت میں میوں قصبے میں منعقد عوامی ریلی سے خطاب کررہے تھے ۔ اس موقع پر مغربی اترپردیش کے انچارج جیوتی رادتیہ سندھیا بھی موجود رہے ۔مسٹر راہل نے نے یو پی اے حکومت کے دوران تقریبا 72 ہزار کروڑ روپئے کسانوں کے معاف کئے جانے کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ اگر ان کی حکومت بنتی ہے تو کسانوں کو قرض کی ادائیگی نہ کرنے کے پاداش میں جیل نہیں جانا پڑے گا۔ ان کی حکومت نے راجستھان، مدھیہ پردیش اورچھتیس گڑھ میں کسانوں کا قرض معاف کیا ہے ۔کانگریس کی ‘نیائے اسکیم’(کم از کم آمدنی کی گارنٹی) کے بارے میں تفصیل سے تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ‘‘ کانگریس نے اپنے تھنک ٹینک سے اس بارے میں دریافت کیا کہ بغیر ملک کی معیشت پر اضافی بوجھ ڈالے غریب عوام کے اکاونٹ میں کتنے روپئے ٹرانسفر کئے جاسکتے ہیں۔ ہمارے ماہرین معاشیات نے کافی غوروخوض کے بعد 72000 روپئے پر اپنی رضا مندی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اتنی رقم غریب کسانوں کو سالانہ بنیاد پر دی جاسکتی ہے اور اس سے کسی پر بھی کوئی قسم کا اضافی بوجھ نہیں پڑے گا۔متعدد وعدوں کو شمار کراتے ہوئے کانگریس لیڈر نے کہا کہ اس وقت تقریبا 22 لاکھ آسامیاں خالی ہیں جنہیں ایک سال میں بھرنے کا کام کیا جائے گا۔ دس لاکھ نوجوانوں کو پنچایت میں روزگا فراہم کیا جائے گا۔ انہوں نے ساتھ ہی یہ بھی کہا کہ کوئی بھی شخص انفرادی طور پر اپنا کاروبار شروع کرسکتا ہے اوراسے کسی قسم کی اجازت کی ضرورت نہ ہوگی یہاں تک کہ تین سال کا وقفہ گذر جائے ۔نریندر مودی پر حملہ کرتے ہوئے کانگریس صدر نے کہا کہ پانچ سال قبل ‘اچھے دن آئیں گے ’ کا نعرہ گردش میں تھا اور اب ‘چوکیدار چور ہے ’ کا نعرے سب کے زبان پر ہے ۔مسٹر گاندھی نے ملک میں 24 گھنٹوں کے اندر 27000 نوجوانوں کے بے روزگار ہونے کا دعوی کرتے ہوئے کہا گذشتہ 45 سالوں میں بے روزگاری کا شرح سب سے زیادہ ہے ۔موجودہ حکومت کو دیگر مسائل پر ہدف تنقید بناتے ہوئے مسٹر گاندھی نے کہا کہ وجے مالیہ، میہول چوکسی او رنیرو مودی کو ملک سے منظم سازش کے تحت جانے دیا گیا۔ملک کے عام عوام سے پیسہ لے کر بڑے سرمایہ کاروں کو فائدہ پہنچایا گیا۔وزیر اعظم سے سوال کرتے ہوئے راہل نے کہا کہ مسٹر مودی یہ کیوں نہیں کہتے وہ حکمرانی میں ناکام رہے ہیں؟انہوں نے مزید کہا کہ رافیل جنگی طیارے معاملے کی جانچ ہوگی اور کوئی بھی نہیں بچے گا۔