وعدے کے مطابق نوکری نہیں ملی | اراضی مالک نے سکول پر تالا چڑھادیا

کنگن// گورنمنٹ مڈل سکول ریزن میں زیر تعلیم طالب علموں اور اساتذہ کو درس و تدریس کا سلسلہ جاری رکھنا پڑا جب اسکول کا مین گیٹ ہی مقفل تھا۔ضلع گاندربل کے زون ہاری گنی ون کے گورنمنٹ مڈل اسکول ریزن گنڈ میں جب اس اسکول میں زیر تعلیم طلبا اور اساتذہ اسکول پہنچ گئے تو وہ اس وقت حیران ہوگئے جب انہوں نے اسکول کے مین گیٹ کو ہی مقفل دیکھا ۔جب انہوں نے اس بارے میں جانکاری حاصل کی کہ اسکول کے مین گیٹ پر کس نے تالاچڑھایا تو اساتذہ کو معلوم ہوا کہ اسکول کے مین گیٹ پر اراضی مالک نے سرکاری نوکری نہ ملنے پر تالہ چڑھا یا ہے جس کے بعد دن بھر اساتذہ اور طلبا کو کھلے آسمان تلے انتظار کرنا پڑا ۔ جب مذکورہ اراضی مالک نے اسکول کا تالہ نہیں کھولا تو اساتذہ نے کھلے میدان میں بچوں کو پڑھانا شروع کیا ۔مذکورہ اراضی مالک عبدالرحیم بٹ نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ اگرچہ انہوں نے 1985 میں اسکول کی عمارت تعمیر کرنے کے لئے اس غرض سے اراضی فراہم کی تھی کہ محکمہ تعلیم اراضی کے بدلے گھر کے ایک فرد کو سرکاری نوکری فراہم کرے گا جو اس وقت مذکورہ شخص کے ساتھ وعدہ کیا گیا تھا لیکن 37سال گزر گئے لیکن آج تک محکمہ تعلیم نے اپنا وعدہ پورا نہیں کیا ۔بٹ نے بتایا کہ اس سے قبل بھی انہوں نے سرکاری نوکری نہ ملنے کی وجہ سے اسکول پر تالا چڑھا دیا تھا لیکن اس کے بعد بھی محکمہ تعلیم کے افسران نے یقین دلایا تھا کہ وہ یہ مسئلہ محکمہ تعلیم کے اعلیٰ حکام کے ساتھ اٹھائے گا جس کے بعد ہم نے ان کی یقین دہانی پر تالا کھولا مگر اس کے بعد ہمارے مطالبہ پر غور نہیں کیا گیا جس کی وجہ سے ہم آج دوبارہ مجبور ہوگئے۔انہوں نے کہا کہ ان کو محکمہ تعلیم کی طرف سے ماہانہ تنخواہ 275روپے ملتی ہے۔ اگرچہ زونل ایجوکیشن افسر نے بھی اراضی مالک کو سمجھایا لیکن انہوں نے ان کا کہنا نہیں مانا۔ بعد میں ایس ایچ او گنڈ سلفی ارشد نے موقع پر پہنچ کر مذکورہ شخص کو یقین دلایا کہ وہ یہ معاملہ محکمہ ایجوکیشن کے افسران کی نوٹس میں لائیں گے اور مذکورہ شخص نے ایس ایچ او گنڈ کی یقین دہانی پر اسکول کا تالا کھول دیا۔