وزیر اعلیٰ نے موقعہ کا جائزہ لیا

 سرینگر//وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے وادی کشمیرمیں متعلقہ محکموں کوتمام زیارت گاہوں کے حفاظتی اقدامات کا جائزہ لینے اور ان مقامات پر فوری طور آگ سے بچائو اقدامات اٹھانے کی ہدایت دی۔ خانقاہ معلی میںآگ کی وارِدات رونما ہونے کے تناظر میں وادی کے تمام زیارت گاہوں کے حفاظت کا جائزہ لینے کے لئے ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ کی صدارت کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے متعلقہ محکموں بشمول وقف بورڈ ، فائر اینڈ ایمرجنسی سروسز ، بجلی ، صحت عامہ ، پولیس محکموں ، ایس ایم سی اور دیگر متعلقہ ایجنسیوں کو مشترکہ طور تمام زیارت گاہوں کی حفاظتی اقدامات کا جائزہ لے کر ان زیارت گاہوں کے تحفظ کے لئے مطلوبہ حفاظتی انتظامات کی فہرست پیش کرنے کے لئے کہا۔ محبوبہ مفتی نے ریاست بھر میں زیارت گاہوں میں آگ بجھانے کے آلات ،سموک الارم ، سی سی ٹی وی اور دیگر آلات نصب کرنے کی ہدایت دی تاکہ ان زیارت گاہوں میں آتشزدگی کے واقعات پیش نہ آئے ۔وزیرا علیٰ نے زیارتِ خانقاہ معلی کے بحالی کام کو فوری طور شرو ع کرکے اور اسے کم از کم مدت میں مکمل کرنے کی ہدایت دی۔ انہوں نے آئی این ٹی ات سی ایچ کو اس مقصد کے لئے دو دن کے اندر اندر ڈرائنگ پیش کرنے کے لئے کہا۔ انہوںنے کہا کہ زیارت گاہ کے بحالی کاموں کی تکمیل کے لئے رقم کی کوئی کمی نہیں ہونے دی جائے گی۔ انہوں نے مقامی انتظامیہ کو ایسے رضاکاروں کی ایک فہرست مرتب کرنے کی ہدایت دی تاکہ انہیں معقول انعامات سے نوازا جاسکے ۔وزیر اعلیٰ کو مطلع کیا گیا کہ زیارت گاہ کے فرش کو دھونے ،خشک کرنے اور نیا فرش بچھانے کے عمل کو مکمل کرنے کے بعد نماز جمعرات سے معمول کے مطابق ادا کی جائے گی۔وزیر اعلیٰ نے متعلقہ ایجنسیوں کو خانیار میں زیارتِ حضرت پیر دستگیر صاحب ؒ پر بحالی کاموں میں سرعت لانے کی ہدایت دی تاکہ زائرین کو مزید کسی دِقت کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔اس موقعہ پر ریاستی عوام کے لئے زیارت گاہ کی اہمیت کے پیش نظر آئی این ٹی اے سی ایچ اور جے کے پی سی سی نے زیارت گاہ کی بحالی کے کام کو مفت مکمل کرنے کی پیش کش کی۔میٹنگ میں فیصلہ لیا گیا ہے کہ ڈپٹی کمشنر سرینگر زیارت کے بحالی کے کاموں کی از خود نگرانی کریں گے تاکہ یہ کام مقررہ مدت کے اندر مکمل ہوسکے ۔