وزیراعظم کی پوری دنیا سے ہندوستان میں سرمایہ کاری کی اپیل

گاندھی نگر//وزیراعظم نریندر مودی نے آج پوری دنیا سے ہندوستان میں سرمایہ کاری کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ ایسا کرنے کے لئے یہ سب سے موزوں وقت ہے ۔ دوسالہ سرمایہ کاری کانفرنس وائبرینٹ گجرات گلوبل سمٹ کا نواں ایڈیشن مسٹر مودی کی آبائی ریاست گجرات کے دارالحکومت گاندھی نگر کے مہاتما مندر میں آج سے شروع ہوا ہے اور 20جنوری تک جاری رہے گا۔ اس کانفرنس میں پانچ ملکوں کے صدور سمیت 115ملکوں کے 30ہزار سے زیادہ نمائندوں اور ہندوستان اور دنیا کے کئی بڑے صنعتی گروپوں کے سربراہان کی موجود رہیں گے ۔ کانفرنس کے افتتاحی اجلاس میں مسٹر مودی نے اپنے خطاب میں پچھلے چار سال میں ان کی حکومت کی جانب سے ملک میں کاروباری آسانی اور بنیادی ڈھانچے کی ترقی وغیرہ کے لئے کئے گئے کاموں کی تفصیل دیتے ہوئے یہ اپیل کی۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ صرف چار سال میں عالمی بینک کی کاروباری آسانی یعنی ‘ایز آف ڈوئنگ بزنس’سے متعلق رپورٹ میں ہندوستان نے 77ویں مقام حاصل کرلیاہے ،پہلے ہندوستان 142ویں مقام پر تھا۔لیکن ان کے اطمینان کے لئے اتنا کافی نہیں ہے اور انہوں نے اگلے سال تک ملک کو اس معاملے میں سر فہرست 50ملکوں میں شامل کرنے کا ہدف طے کیا ہے ۔ جاپان کے سوزوکی گروپ سمیت کئی عالمی صنعتی گروپوں کے سربراہان اور مکیش امبانی،گوتم اڈانی،کمار منگلم برلا،این چندرشیکھر سمیت کئی چوٹی کے ہندوستانی صنعت کاروں کی موجودگی میں مسٹر مودی نے یہ بھی کہاکہ ان کی حکومت کے دوران گزشتہ چار سال میں مجموعی گھریلو پیداوار یعنی جی ڈی پی میں7.3 فیصد اوسط سالانہ شرح سے اضافہ ہوا ہے جو 1991 میں ملک میں نرم کاری کی شروعات کے بعد سے اب تک کسی بھی حکومت کے لئے اس معاملے میں سب سے زیادہ شرح نمو ہے ۔اسی طرح ان کی حکومت کے دوران افراط زرکی اوسط شرح 4.6رہی ہے جو 1991سے اب تک کی سب سے کم شرح ہے ۔ وزیراعظم نے کہا کہ ہندوستان آج مسلسل سب سے تیزی سے ترقی کرنے والی دنیاکی سب سے بڑی معیشتوں میں شامل ہوچکا ہے ۔ عالمی بینک اور موڈیز جیسی ساکھ طے کرنے والی ایجنسیوں نے ہماری معیشت میں اعتماد ظاہر کیا ہے ۔ملک کے سامنے افقی اور عمودی دونوں طریقے سے ترقی کرنے کاچیلنج ہے تاکہ پسماندہ طبقوں تک ترقی کے فائدے پہنچیں اور زندگی اور بنیادی سہولیات کے معیار کے سلسلے میں بڑھتی امیدوں کو بھی پورا کیا جاسکے ۔گزشتہ چار سال میں ان کی حکومت کی توجہ سرکاری مداخلت کو کم کرنے اور گوڈ گورنینس کو فروغ دینے پر ہی رہی ہے ۔ان کی توجہ بہتری ،کارکردگی ،تبدیلی اور پھرسے بہتر کارکردگی پر ہی مرکوز رہی ہے ۔ مسٹر مودی نے کہا کہ ان کی حکومت نے کاروبار کرنے کو سستا بھی بنایا ہے ۔جی ایس ٹی اور ٹیکس سسٹم کو آسان کرنے جیسے اقدامات نے کاروباری اخراجات میں کمی کی ہے اور طریقے کار کو زیادہ موثر بنایا ہے ۔اسے ڈیجیٹل پروسس اور ایک نکاتی رابطے کے ذریعہ اور تیز بنادیا گیا ہے ۔وہ ہندوستان میں کاروبار کو اسمارٹ بنانا چاہتے ہیں۔گزشتہ چار سال میں ملک میں غیر ملکی براہ راست سرمایہ کاری 263ارب ڈالرکی رہی ہے جو پچھلے 18سال کے کچھ ایسی سرمایہ کاری کا 45فیصد ہے ۔ایسی سرمایہ کاری کے لئے 90فیصد منظوری آٹومیٹک سسٹم سے دی جارہی ہے ۔اقوام متحدہ کی تنظیم انکٹاڈ کے مطابق ہندوستان دنیا کے دس سب سے پسندیدہ غیر ملکی براہ راست سرمایہ کاری مقامات میں شامل ہوگیا ہے ۔ہندوستان دنیا میں اسٹارٹ اپ کے سب سے بڑے بنیادی ملکوں میں بھی شامل ہے ۔یہاں انجینئرنگ کی اعلی اسطحی سہولیات ہیں۔جی ڈی پی درمیانے طبقے کی آمدنی بڑھ رہی ہے ،ایک بڑا گھریلو بازار ہے ۔ انہوں نے کہا ہ ان کی حکومت نے ملک میں تعمیر نو کو فروغ دے کر اپنے نوجوانوں کے لئے روزگار کے مواقع پیداکرنے کے لئے سخت محنت کی ہے ۔میک ان انڈیاکے ذریعہ ہونے والی سرمایہ کاری کوڈیجیٹل انڈیا اور اسکل انڈیا جیسے پروگراموں کے ذریعہ اچھا تعاون ملا ہے ۔ان کی حکومت نے نئے اداروں اور طریقوں پر توجہ دی ہے جو صرف کاروباری آسانی کے لئے ہی نہیں بلکہ ہمارے لوگوں کی زندگی میں سہولت کے لئے بھی ہے ۔یواین آئی