واٹر ٹینک 8 سال سے تکمیل کی منتظر لنگیٹ میںلوگ پینے کے صاف پانی سے محروم

 طارق رحیم

کپوارہ//کپوارہ ضلع کے خانو اور ملحقہ دیہات کے مکینوں نے گزشتہ آٹھ سالوں سے زیر تعمیر ہیڈ واٹر ٹینک کو مکمل نہ کرنے پر محکمہ جل شکتی کے خلاف سخت ناراضگی کا اظہار کیا ہے جس کے نتیجے میں لوگوں کو کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔مکینوں کا کہنا تھا کہ 2014 میں اس منصوبے کی منظوری دی گئی تھی جس کے بعد اس پر کام شروع کیا گیا تھا لیکن 8 سال گزرنے کے باوجود مکمل نہ ہونے سے مقامی لوگوں کو مایوسی ہوئی ہے۔مکینوں نے بتایا کہ یہ منصوبہ 13.5 کروڑ سے تعمیر کیا جا رہا ہے جس میں سے 6 کروڑ پہلے ہی منظور شدہ ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ اوور ہیڈ واٹر ٹینک کی تعمیر پر 70 لاکھ روپے خرچ ہو چکے ہیں اور بقیہ کام نامعلوم وجوہات کی بناء پر نہیں کیا جا رہا ہے۔مقامی لوگوں نیبتایا، “اس پروجیکٹ میں فلٹریشن پلانٹ کی تعمیر اور مذکورہ دیہات میں پائپ بچھانا، فلٹریشن پلانٹ اور پائپوں کو ایک طرف چھوڑ دینا شامل ہے، اوور ہیڈ ٹینک آج تک مکمل نہیں ہوا ہے”۔انہوں نے مزید کہا کہ “ہم مقامی نالے کا آلودہ پانی استعمال کرنے پر مجبور ہیں جو ہمیشہ ہمارے لیے پانی سے پیدا ہونے والی بیماریوں کا خطرہ بنتا ہے۔”مکینوں کا کہنا ہے کہ انہوں نے متعدد بار متعلقہ محکمے کے نوٹس میں یہ مسئلہ لایا لیکن کوئی فائدہ نہیں ہوا۔انہوں نے اس سلسلے میں ایل جی منوج سنہا سے فوری مداخلت کی درخواست کی ہے تاکہ ان کی مانگ کو جلد سے جلد پورا کیا جائے۔